اسرائیل کی جانب سے غزہ کے شہریوں کو ہجرت کرنے کے احکامات

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے شمال میں واقع غزہ شہر کے فلسطینیوں سے کہا کہ وہ علاقہ چھوڑ کر وسطی علاقے دیر البیلہ کی طرف ہجرت کریں

2161460
اسرائیل کی جانب سے غزہ کے شہریوں کو ہجرت کرنے کے احکامات

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے شمال میں واقع غزہ شہر کے فلسطینیوں سے کہا کہ وہ علاقہ چھوڑ کر وسطی علاقے دیر البیلہ کی طرف ہجرت کریں۔

غزہ کی پٹی میں، جہاں تقریباً 2.3 ملین لوگ آباد ہیں ، جبری ہجرت فلسطینیوں کی زندگی کا حصہ بن چکی ہے۔

7 اکتوبر سے شروع ہونے والے حملوں کے بعد سے غزہ میں تقریباً 1.9 ملین فلسطینی جبری طور پر بے گھر ہو چکے ہیں۔

اسرائیلی فوج کے حملوں کی وجہ سے لاکھوں فلسطینی متعدد بار ہجرت پر مجبور ہوئے ہیں ۔

اسرائیل، جس نے غزہ کے جنوب میں خان یونس اور رفح میں پناہ لینے والے فلسطینیوں کو بار بار بے گھر کیا ہے،  اب اس علاقے  سے  لوگوں کو جبری ہجرت کی طرف لے جا رہا ہے۔

اس سسلے میں اسرائیلی فوج نے غزہ شہر میں فضا سےپمفلٹ  گرائے ہیں ۔

پمفلٹس  میں کہا گیا  ہے کہ  غزہ شہر "ایک خطرناک تنازعہ کا علاقہ  بن چکا ہے  اور اب اس علاقے سے  فلسطینیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی کے وسطی حصے میں واقع دیر البیلہ کی طرف ہجرت کریں۔

پمفلٹ میں  دیکھا جاسکتا ہے کہ اسرائیلی فورسز نے جن علاقوں کو خالی کرنے کی درخواست کی ہے ان میں پورا غزہ شہر شامل ہے۔

گزشتہ ہفتے اسرائیلی فوج نے غزہ شہر کے بعض محلوں میں رہنے والے فلسطینیوں کو علاقہ چھوڑنے کے نوٹس جاری کیے تھے۔

اسرائیلی فوج کے حملے جنوبی اور شمالی علاقوں میں رفح پر مرکوز ہیں۔

اسرائیلی فوج جس نے غزہ کی پٹی کے شمال میں بالخصوص غزہ شہر میں اپنے حملے تیز کر دیے ہیں، ایک بار پھر متعدد بار بے گھر ہونے والے فلسطینیوں کو ہجرت پر مجبور کر رہی ہے۔

حملوں کی وجہ سے ہزاروں فلسطینیوں کو جبری ہجرت کے لیے ایک خطہ سے دوسرے علاقے کی طرف دھکیل دیا جا رہا ہے، جو کہ اپنے ساتھ لے جانے والی چند اشیاء کے ساتھ معمول بن  چکا  ہے۔



متعللقہ خبریں