یمنی حوثیوں کا حملہ، اسرائیلی بحری جہاز ڈوب سکتا ہے

ہم نے، اسرائیلی بحری جہاز کو ڈرون طیاروں اور بیلسٹک میزائلوں کے ساتھ ہدف بنایا ہے۔ اس ضرب کی وجہ سے جہاز ڈوب سکتا ہے: یحییٰ سیری

2152351
یمنی حوثیوں کا حملہ، اسرائیلی بحری جہاز ڈوب سکتا ہے

یمن کے حوثیوں نے اسرائیلی بحری جہاز کو نشانہ بنانے اور حملے میں جہاز کو بھاری نقصان پہنچنے کا اعلان کیا ہے۔

حوثیوں کے فوجی ترجمان یحییٰ سیری نے ٹیلی ویژن کے لئے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ "ہم نے، بحیرہ احمر میں محوِ سفر ٹوٹر نامی، اسرائیلی بحری جہاز کو ڈرون طیاروں اور بیلسٹک میزائلوں کے ساتھ ہدف بنایا ہے۔ حملے میں بحری جہاز کو سخت نقصان پہنچا ہے اور اس ضرب کی وجہ سے جہاز ڈوب سکتا ہے"۔

سیری نے کہا ہے کہ "جہاز کو، اسرائیلی بندرگاہوں پر جانے کی ممانعت سے متعلقہ فیصلے کی خلاف ورزی کرنے پر، نشانہ بنایا گیا ہے"۔

واضح رہے کہ ایرانی حمایت کے حامل  یمنی حوثی،  غزّہ پر اسرائیلی حملوں کے خلاف بطور ردعمل، 31 اکتوبر سے یمن کے کھُلے سمندر میں اسرائیلی کمپنیوں کے بحری جہازوں پر قبضہ کر رہے اور بعض کو ڈرون طیاروں کے ساتھ نشانہ بنا رہے ہیں۔

حوثی کاروائیوں کے بعد متعدد کمپنیوں نے بحیرہ احمر میں سیر و سفر بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

امریکہ نے عالمی بحری تجارت کی سلامتی  کو خطرے میں دِکھا کر 18 دسمبر کو بعض ممالک کے ساتھ مِل کر حوثیوں کے خلاف "رفاح محافظ آپریشن" کے زیر عنوان کثیر الملل بحری ڈیوٹی فورس بنانے کا اعلان کیا تھا۔

جواباً جاری کردہ بیان میں حوثیوں نے کہا تھا کہ حوثی  کنٹرول والے علاقوں پر امریکی اور برطانوی حملوں کی صورت میں بحیرہ احمر میں ان ممالک کے تمام بحری جہازوں کو نشانہ بنایا جائے گا۔



متعللقہ خبریں