شام، امریکی ڈراؤن حملے میں القاعدہ کا سرغنہ ہلاک

القاعدہ  شام کو اپنے  وجود کو برقرار رکھنے، بیرونی تنظیموں کے ساتھ روابط قائم کرنے اور دہشت گرد کاروائیوں کی منصوبہ بندی   کے لیے ایک محفوظ مقام کے طور پر استعمال کر رہی ہے

1723800
شام، امریکی ڈراؤن حملے میں القاعدہ کا سرغنہ ہلاک

شامی شہر تل عبید سے منسلک  سولوک  قصبے کے جوار میں  کیے گئے فضائی حملے میں  القاعدہ کا ایک اعلی سطحی سرغنہ  عبدالحمید الا ماتار  مارا گیا ۔

امریکی  سینٹ کوم  کے ہیڈکواٹر کے تحریری بیان میں   امریکی  حملے میں  دہشت گرد سرغنہ  الا ماتار کے ہلاک ہونے  کی وضاحت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ایم  قیو ۔9 قسم کے ڈراؤن کے ذریعے  کیے  گئے حملے سے  شہریوں کی ہلاکتوں کے  بارے میں ہمارے پاس کسی قسم کی معلومات موجود نہیں۔

 القاعدہ کے امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے  لیے خطرہ تشکیل دینے  کے عمل  کو جاری رکھنے   کا ذکر کرنے والے اس اعلامیہ میں   کہا گیا ہے کہ ’’القاعدہ  شام کو اپنے  وجود کو برقرار رکھنے، بیرونی تنظیموں کے ساتھ روابط قائم کرنے اور دہشت گرد کاروائیوں کی منصوبہ بندی   کے لیے ایک محفوظ مقام کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔ یہ علاوہ ازیں اس ملک کو شام، عراق اور دیگر ممالک کے لیے  خطرات  پیدا کرنے کے  لیے ایک اڈے کی حیثیت سے  بروئے کار لا رہی ہے۔

 



متعللقہ خبریں