لیبیا، خفتر قوتوں کا راس لانوف بندر گاہ پر ایک بحری جہاز پر حملہ

بندر گاہ اور تیل کے کنوؤں کے واقع ہونے والے علاقوں کو بند کیے جانے سے ملک کو 208 دنوں میں 8 ارب 221 ملین ڈالر کا نقصان پہنچا ہے

1485233
لیبیا، خفتر قوتوں کا راس لانوف بندر گاہ پر ایک بحری جہاز پر حملہ

مشرقی لیبیا کی غیر قانونی مسلح قوتوں کے لیڈر  خلیفہ خفتر  سے منسلک ایک  گروہ نے راس لانوف بندر گاہ پر موجود ایک بحری جہاز پر حملے کی کوشش کی۔

لیبیائی قومی پیٹرولیم ادارے نے تحریری اعلان میں کہا ہے کہ خفتر قوتوں اور غیر ملکی  کرائے کے فوجیوں نے بندر گاہ  پر لنگر ڈالنے کی کوشش میں ہونے والے ایک بحری جہاز پر گولیوں اور راکٹوں سے حملہ کیا  جس کے نتیجے میں اس بحری جہاز پر لوڈنگ کا کام تاخیری کا موجب بنا۔

لیبیائی تیل کے 80 فیصد سے زائد ذخائر کے حامل مشرقی علاقوں پر قبضہ جمانے والے خفتر   نے تیل کو اقوام متحدہ کی جانب سے تسلیم کردہ حکومتِ لیبیا کے خلاف استعمال کرنے کے لیے 18 جنوری سے ابتک بندر گاہ اور اس کی تنصیبات کو بند کر رکھا ہے۔

ملک کے تیل کے امور کے ذمہ دار قومی پیٹرولیم ادارے نے اعلان کیا تھا کہ بندر گاہ اور تیل کے کنوؤں کے واقع ہونے والے علاقوں کو بند کیے جانے سے ملک کو 208 دنوں میں 8 ارب 221 ملین ڈالر کا نقصان پہنچا ہے۔

 



متعللقہ خبریں