11 اپریل سے ایران وائرس مخالف جنگ کے دوسرے مرحلے میں داخل ہو رہا ہے، صدر حسن روحانی

اس وبا کے  ماحول  میں عوام کو گھر پر رہنے  کی تلقین کرنا اور اس حوالے سے قانونی  حکم نامہ جاری کرنا  سب  سے آسان کام ہے، ایرانی صدر

1393802
11 اپریل سے ایران وائرس مخالف جنگ کے دوسرے مرحلے میں داخل ہو رہا ہے، صدر حسن روحانی

ایرانی صدر حسن روحانی نے کابینہ کے اجلاس  میں کہا ہے  کہ بعض کاروباری سرگرمیوں کو 11 اپریل  بروز ہفتے سے بحال  کرنے کے بعد مہلک وائرس کے خلاف جنگ کا دوسرا رمرحلہ شروع ہو گا جو کہ پہلے مرحلے سے کہیں زیادہ کٹھن ہوگا۔

انہوں نے بتایا کہ اس وبا کے  ماحول  میں عوام کو گھر پر رہنے  کی تلقین کرنا اور اس حوالے سے قانونی  حکم نامہ جاری کرنا  سب  سے آسان کام ہے  تا ہم ، یہ چیز نا ممکن ہے۔ بعض شہریوں کو ملکی پیداوار کو جاری رکھنے کے لیے اپنے اپنے گھروں سے نکلنا ہو گا۔

صدر روحانی  کا کہنا  ہے کہ’’بروز ہفتے سے کورونا کے خلاف نبردِ آزمائی  کا ایک نیا مرحلہ شروع ہو گا اور  اس دوران ہمیں عوامی تعاون کی  کہیں زیادہ ضرورت پڑے گی، یہ ایام گزشتہ ایام سے  کہیں زیادہ آزمائشی ہوں گے۔  ہم اس دورانیہ میں اقتصادی سرگرمیوں اور  موذی مرض کے خلاف بیک وقت  جدوجہد کو حسبِ طاقت و وسائل کے ساتھ جاری رکھنے کے خواہاں ہیں۔ پہلے صرف گھر پر بند رہنے کی جدوجدل تھی اب کی بار اقتصادی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کی محاذ آرائی کی جائیگی۔

انہوں نے بتایا کہ وبا نے ملک کو مشکلات اور دکھ و درد سے دو چار کیا ہے،  اس کے جواب میں ہم نے حفظان صحت کے میدان میں انتہائی درست اقدامات اٹھائے   اور آج وائرس کی ٹیسٹ کٹ کی ایک بڑی تعداد کو ذاتی امکانات کی بدولت تیار کیا جا رہا ہے۔

ایرانی صدر نے کووڈ۔19 کے خلاف جنگ  میں استعمال کرنے کے زیر مقصد عالمی مالیاتی فنڈ سے قرضے کا مطالبہ کیے جانے کا بھی ذکر چھیڑتے ہوئے بتایا کہ امریکہ کی جانب سے رکاوٹ پیدا کیے جانے والے 5 ارب ڈالر  کے قرضے  کو بلا کسی تفریق بازی کے فراہم کیا جائے ، تمام تر عالمی برادری کو اس کھٹن دور میں اپنے اپنے فرائض کو ادا کرنا چاہیے۔ ہم بھی عالمی بینک اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے رکن ہیں۔ ہم اپنے حصے اور فنڈز کی ادائیگیاں بھی کر رہے ہیں اور ہمارے وسائل کا ایک حصہ انہی فنڈز میں شامل ہے۔  اگر اس  معاملے میں ایران اور دیگر ممالک کے درمیان تفریق بازی کی گئی تو یہ بات ہمارے لیے محتمل نہیں ہو گی۔  گزشتہ 50 برسوں میں ہم نے اس فنڈ سے کبھی  بھی ادائیگی کا مطالبہ نہیں کیا اور اس کے مد مقابل ہم اپنے فرائض ادا کرتے چلے آئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کی ایران پر پابندیوں نے مہلک وائرس کے خلاف ان کے ملک کی جنگ کو بری طرح متاثر کیا ہے اور یہ صحت  کی عالمی تنظیم کے معاہدوں کی خلاف ورزی ہے۔

 



متعللقہ خبریں