سعودی عرب: ہمیں یورپی یونین کے فیصلے پر افسوس ہے

سعودی عرب کے، منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف جدوجہد سے متعلق،  متعدد قوانین اور قانونی  مراحل کی منظوری دینے کے باوجود یورپی یونین کے اسے بلیک لسٹ میں شامل کرنے پر ہمیں افسوس ہے: ریاض انتظامیہ

1145231
سعودی عرب: ہمیں یورپی یونین کے فیصلے پر افسوس ہے

سعودی عرب نے یورپی یونین  کے ،منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کی مالی معاونت کے خلاف جدوجہد  کے معیاروں پر عمل درآمد نہ کرنے کی وجہ سے سعودی عرب کو بلیک لسٹ میں لینے  کے، فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA کے مطابق ریاض انتظامیہ نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے، منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف جدوجہد سے متعلق،  متعدد قوانین اور قانونی  مراحل کی منظوری دینے کے باوجود یورپی یونین کے اسے بلیک لسٹ میں شامل کرنے پر ہمیں افسوس ہے۔

ریاض انتظامیہ نے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف  جدوجہد کے دائرہ کار میں جاری گلوبل کاروائیوں کی بھرپور شکل میں حمایت کرنے  کا اعادہ کیا اور کہا ہے کہ ہم اس معاملے میں بین الاقوامی سطح پر اپنے ساجھے داروں اور اتحادیوں کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب دہشت گرد تنظیم داعش  کے خلاف جدوجہد  میں مصروف بین الاقوامی کولیشن  کا بنیادی ساجھے دار ہے اور امریکہ اور اٹلی  کے ساتھ مل کر دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف جدوجہد کرنے والے گروپ کی قیادت کر چکا ہے ۔ علاوہ ازیں سعودی انتظامیہ نے منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کی مالی معاونت کے خلاف جدوجہد اور ان سے متعلقہ خطرات کو کم کرنے کے لئے متعدد قوانین اور قانونی مراحل کی منظوری دی ہے اور انہیں نافذ کیا ہے۔

واضح رہے کہ یورپی یونین کمیشن نے کل جاری کردہ بیان میں  منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کی مالی معاونت  کے خلاف جدوجہد  کے اصولوں کی پابندی نہ کرنے کی وجہ سے  سعودی عرب کو بلیک لسٹ میں شامل کرنے کا اعلان کیا تھا۔



متعللقہ خبریں