ریاض کانفرنس میں شرکت کو منسوخ کرنے والے افراد کی تعداد میں بتدریج اضافہ

سعودی صحافی جمال خاشقجی کی گمشدگی کا معاملہ مبہم رہنے کی وجہ سے سعودی عرب کے شہر ریاض میں متوقع کانفرنس میں شرکت کو منسوخ کرنے  والے افراد  کی تعداد میں ہر روز اضافہ ہو  رہا ہے

1069570
ریاض کانفرنس میں شرکت کو منسوخ کرنے والے افراد کی تعداد میں بتدریج اضافہ

سعودی صحافی جمال خاشقجی کی گمشدگی کا معاملہ مبہم رہنے کی وجہ سے سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کی زیر نگرانی ریاض میں 23 سے 25 اکتوبر کو متوقع کانفرنس میں شرکت کو منسوخ کرنے  والے افراد  کی تعداد میں ہر روز اضافہ ہو  رہا ہے۔

امریکہ کے سب سے بڑے بینکوں میں سے Chase کے منتظم اعلیٰ جیمی ڈیمن اور فورڈ کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے سربراہ  بِل فورڈ نے مقّرر کی حیثیت سے کانفرنس میں شرکت کرنا تھی تاہم اب مذکورہ دونوں شخصیات نے کانفرنس  میں شرکت نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

امریکہ کی سرمایہ کار کمپنی بلیک روک  کے منتظمِ اعلیٰ 'لیری فِنک' اور بلیک سٹون کے منتظم اعلیٰ' سٹیفن شوارزمین' نے بھی کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

گوگل کے سابق منتظمین میں سے کائی۔فُو لِی نے بھی کہا ہے کہ وہ کانفرنس میں شرکت نہیں کریں گے اور نیو یارک کی میڈیا کمپنی بلوم برگ نے بھی کانفرنس کی اسپانسر شپ کو ختم کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سب سے پہلے نیویارک ٹائمز نے کانفرنس  کی اسپانسر شپ کو ختم کیا اور اس کے بعد ترتیب سے سی این این، سی این بی سی، ہفنگٹن پوسٹ، لاس اینجلس ٹائمز اور فنانشیل ٹائمز نے کانفرنس کی اسپانسر شپ ختم کر دی تھی۔

تاہم فوکس تا حال  کانفرنس   کی اسپانسر شپ کو جاری رکھے ہوئے ہے اور اس نے کہا ہے کہ ہم خاشقجی کے موضوع پر بھی بغور نگاہ رکھے ہوئے ہیں۔

علاوہ ازیں کانفرنس میں شرکت  کے فیصلے پر تاحال قائم امریکہ کے وزیر خزانہ سٹیون منوچِن توجہ کا مرکز بن رہے ہیں۔



متعللقہ خبریں