نیپال کے کوہ پیما نے 14 پہاڑ 7 ماہ میں سر کرتے ہوئےایک نیا ریکارڈ بنا لیا

نیپال کے 36 سالہ نرمل پورجا نے اپنے ملک کے 7، پاکستان کے 6 اور تبت میں موجود 2 دنیا کے بلند ترین پہاڑوں کو 7 ماہ سے بھی کم مدت میں سر کرکے نیا ریکارڈ بنایا

نیپال کے کوہ پیما نے 14 پہاڑ 7 ماہ میں سر کرتے ہوئےایک نیا ریکارڈ بنا لیا

نیپال کے سابق فوجی نے انتہائی کم وقت میں دنیا کے بلند ترین 14 پہاڑوں کو سر کرکے دنیا کے تیز ترین کوہ پیما بننے کا اعزاز حاصل کرلیا۔

نیپال کے 36 سالہ نرمل پورجا نے اپنے ملک کے 7، پاکستان کے 6 اور تبت میں موجود 2 دنیا کے بلند ترین پہاڑوں کو 7 ماہ سے بھی کم مدت میں سر کرکے نیا ریکارڈ بنایا۔

نرمل پورجا نے گزشتہ 6 ماہ میں 8 ہزار میٹر یعنی 26 ہزار فٹ سے زائد بلند چوٹیوں کو سر کیا۔

نرمل پورجا نے سب سے پہلے 23 اپریل کو اپنے ہی ملک کی پہاڑی ’اناپورنا‘ کو سر کیا، جس کے بعد 12 مئی کو انہوں نے "ڈھولاگری" نامی پہاڑی کو سر کیا۔

نرمل پورجا نے 15 مئی کو "کینگچر جگنا" 22 مئی کو "ایوریسٹ"، اسی دن ہی "لہوٹسے" اور دو دن بعد 24 مئی کو "مکلو"کی پہاڑی کو سر کیا۔

نیپال کی چوٹیاں سر کرنے کے بعد نرمل پورجا نے رواں  سال  جولائی میں پاکستان کا رخ کیا اور تین جولائی کو انہوں نے "نانگا پربت" 15 جولائی کو "گاشربرم اول" اور تین دن بعد 18 جولائی کو "گاشربرم دوئم" کو سر کیا۔

نرمل پورجا نے 24 جولائی کو "کے ٹو" 26 جولائی کو "بروڈ پیک" 23 ستمبر کو "چوایو"اور 27 ستمبر کو "مناسلو" کی چوٹی کو سر کیا۔

 نرمل پورجا نے گزشتہ روز یعنی 28 اکتوبر کو "شیشپانگما" کو سرکیا۔

اس سے قبل دنیا کے 14 ہی بلند پہاڑوں کو تیزی سے سر کرنے کا اعزاز جنوبی کوریا کے کوہ پیما کم چانگ ہو کے پاس تھا جنہوں نے یہی   پہاڑ   7 سال 10 ماہ اور 6 دن میں سر کیے  تھے۔

 



متعللقہ خبریں