چین نے تائیوان کے اطراف میں فوجی مشقیں شروع کر دیں

چین مسلح افواج نے نینسی پیلوسی کے دورہ تائیوان کے بعد آبنائے تائیوان میں میزائل مشقوں کا آغاز کر دیا

1863612
چین نے تائیوان کے اطراف میں فوجی مشقیں شروع کر دیں

چین مسلح افواج نے امریکہ کی اسمبلی اسپیکر نینسی پیلوسی کے دورہ تائیوان کے بعد آبنائے تائیوان میں میزائل مشقوں کا آغاز کر دیا ہے۔

چائنہ پیپلز لبریشن آرمی کے مشرقی فرنٹ کمانڈ آفس کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ "آبنائے تائیوان  کے مشرق میں بعض علاقوں پر روایتی میزائل فائرنگ کر کے اہداف کو کامیابی سے نشانہ بنایا گیا ہے"۔

بیان کے مطابق جزیرے کے شمال، جنوب مغرب اور جنوب مشرق میں بحریہ و فضائیہ کی مشترکہ مشقوں میں، مشرق کی طرف روایتی میزائل فائرنگ کا تجربہ کیا گیا اور آبنائے تائیوان میں طویل مسافت کی توپ فائرنگ کی گئی۔

مشقیں ، چینی حاکمیت کے خلاف  جزیرے کے اطراف کاعملاً محاصرہ کئے ہوئے ہیں اور توقع ہے کہ 7 اگست تک جاری رہیں گی۔

6 علاقوں میں جاری مشقوں کی وجہ سے بعض علاقوں کو بحری و فضائی ٹریفک کے لئے بند کر دیا گیا  اور کہا گیا ہے کہ آبنائے کی گزرگاہ میں سکیورٹی اندیشوں کی وجہ سے فضائی و بحری رسل و رسائل کو ملتوی کر دیا گیا ہے۔

دوسری طرف تائیوان وزارت دفاع نے کل رات،پیلوسی کی جزیرے سے روانگی کے بعد، چینی فوج کے ڈرون طیارے کی، تائیوان سے منسلک جزیرے، کنمن پر پرواز کی اطلاع دی ہے۔

یاد رہے کہ 1950 کے بعد سے چینی کے کسی طیارے نے کنمن پر پرواز نہیں کی تھی۔

پیلوسی اور امریکی کانگریس کے 5 رکنی وفد کا طیارہ گذشتہ رات تائیوان پہنچا تھا۔  دو ہفتوں سے مباحثوں کا سبب اور امریکہ اور چین کے درمیان کشیدگی کا سبب بننے والا یہ دورہ بیجنگ انتظامیہ کے ردعمل کا سبب بنا تھا۔

چین وزارت خارجہ نے پیلوسی کا طیارہ تائیوان اترتے ہی بیان جاری کیا اور دورے کی مذمت کی تھی۔ چین وزارت دفاع نے بھی جاری کردہ بیان میں کہا تھا کہ "ہم چند فوجی مشقیں کریں گے"۔

بیجنگ انتظامیہ، تائیوان کو اپنی زمین قبول کرتی ہے اور جاری کردہ بیان میں دورے کو "چینی حاکمیت اور زمینی سالمیت کی خلاف ورزی" قرار دیا گیا تھا۔ علاوہ ازیں دورے کے جواب میں  سخت تدابیر کی وارننگ دی گئی تھی۔



متعللقہ خبریں