طالبان وفد ناروے میں

تمام شرکاء نے قبول کیا ہے کہ افغانستان کے تمام مسائل کا واحد حل افہام و تفہیم اور باہمی تعاون ہے: ذبیح اللہ مجاہد

1767325
طالبان وفد ناروے میں

افغانستان طالبان انتظامیہ کے وفد نے ناروے کے دارالحکومت اوسلو میں متعدد حکام کے ساتھ مذاکرات کئے۔

طالبان عبوری حکومت کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ٹویٹر سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ طالبان وفد نے نارویجیئن حکام کے ساتھ اجلاس کیا۔ اجلاس میں شرکاء نے صبر و تحمل کے ساتھ ایک دوسرے کے موقف کو سُنا اور ملک کی موجودہ صورتحال کے بارے میں تبادلہ خیالات کیا۔

ذبیح اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ اجلاس کے شرکاء نے تصدیق کی ہے کہ افغانستان تمام افغانوں کا مشترکہ گھر ہے اور ملک میں زیادہ بہتر سیاست، اقتصادیات اور سلامتی کے لئے افغانوں کو مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ تمام شرکاء نے قبول کیا ہے کہ افغانستان کے تمام مسائل کا واحد حل افہام و تفہیم اور باہمی تعاون ہے۔

واضح رہے کہ ناروے وزارت خارجہ نے جاری کردہ بیان میں 23 تا 25 جنوری کے دوران طالبان نمائندوں کو اوسلو مدعو کرنے کا اعلان کیا تھا۔

بیان میں کہا گیا تھا کہ دورے کے دوران افغان وفد، ناروے حکومت کے بعض اتحادی ممالک کے اور سِول سوسائٹیوں کے، نمائندوں کے ساتھ ملاقاتیں کرے گا۔

ناروے کی وزیر خارجہ آنیکن ویٹ فیلٹ نے 21 جنوری کو جاری کردہ بیان میں افغانستان میں انسانی بحران پر اندیشوں کا اظہار کیا اور کہا تھا کہ حالیہ دنوں میں ملک کو درپیش حالات لاکھوں انسانوں کو متاثر کر رہے ہیں اور حقیقی معنوں میں ایک تباہی ہیں۔

ویٹ فیلٹ نے کہا تھا کہ "طالبان وفد کے ساتھ ملاقاتیں طالبان کو جائز حیثیت دینے یا انہیں تسلیم کرنے کا مفہمو نہیں رکھتیں لیکن ہم ملک کو عملاً چلانے والوں سے مخاطب ہونے پر مجبور ہیں"۔

 



متعللقہ خبریں