سکھ برادری کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو اپنا ہیرو قرار دیے جانے پر مودی سرکار حواس باختہ

بھارتی میڈیا کےمطابق بھارتی پنجاب کےوزیراعلیٰ امریندر سنگھ کواپوزیشن کی جانب سےکرتارپور راہداری کے معاملے پر شدید تنقید کا سامنا ہے جب کہ پنجاب کے مختلف علاقوں میں پاکستان کے وزیراعظم عمران خان اور نوجوت سنگھ سدھو کے پوسٹرز اور بینرز آویزاں کیے گئے ہیں

سکھ برادری کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو  اپنا ہیرو  قرار دیے جانے پر مودی سرکار حواس باختہ

کرتارپور راہداری کھولنے پر بھارتی پنجاب میں وزیراعظم عمران خان کے پوسٹرز اور بینرز آویزاں کردیے گئے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ کو اپوزیشن کی جانب سے کرتارپور راہداری کے معاملے پر شدید تنقید کا سامنا ہے جب کہ پنجاب کے مختلف علاقوں میں پاکستان کے وزیراعظم عمران خان اور نوجوت سنگھ سدھو کے پوسٹرز اور بینرز آویزاں کیے گئے ہیں جن میں کرتارپور راہداری کے معاملے پر دونوں شخصیات کو ہیرو قرار دیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہےکہ یہ پوسٹرز امرتسر کے میونسپل کونسلر ہرپال سنگھ کی جانب سے لگوائے گئے ہیں جو نوجوت سنگھ سدھو کے انتہائی قریبی سمجھے جاتے ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور کانگریس رہنما نوجوت سدھو کے پوسٹر پر یہ بھی تحریر کیا گیا ہےکہ کرتارپورداری کھلوانے کو حقیقت بنانے پر عمران اور سدھو ہمارے ہیرو ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی پنجاب کے کئی علاقوں میں منگل کی دوپہر تک یہ بینرز دیکھے گئے جنہیں بعد میں فوری طور پر اتروا لیا گیا۔

واضح رہےکہ کرتارپور راہداری کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب میں سابق کرکٹر اور کانگریس رہنما نوجوت سدھو وزیراعظم عمران خان کی دعوت پر پاکستان آئے تھے جس کے بعد انہیں بھارت میں شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

وزیراعظم عمران خان کرتارپورراہداری کا باضابطہ افتتاح 9 نومبر کو سکھوں کے مذہبی پیشوا بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن کے موقع پر کریں گے۔

امرتسرمیں وزیراعظم عمران خان کے بل بورڈز لگنے پر انتہا پسند مودی سرکارحواس باختہ ہوگئی اور انتظامیہ نے زبردستی عمران خان کی تصویر والے بل بورڈز ہٹاوا دئیے، بل بورڈزپرعمران خان اورنوجوت سنگھ سدھوکی تصاویرموجود تھیں۔

یاد رہے بھارتی ریاست امرتسر میں کرتار پور رداہدری کا تحفہ ملنے پر وزیراعظم عمران خان کی خوب دھوم ہے اور شہر بھر میں عمران خان کی تصاویر والے بڑے بڑے بل بورڈز لگائے گئے تھے۔

یاد رہے کہ  پاکستان کی تحصیل شکر گڑھ میں واقع کرتار پور وہ جگہ ہے جہاں سکھ مذہب کے بانی اور پہلے گرو نانک دیو جی نے اپنی زندگی کے آخری ایام گزارے تھے۔

بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات کشیدہ ہونے کے باوجود پاکستان نے کارتار پور منصوبے پر کام جاری رکھا اور کام مکمل کردیا۔



متعللقہ خبریں