بھارت، کیرالہ میں 50 لاکھ خواتین کی انسانی زنجیر

ہندوؤں کے مقدس ترین  مندروں میں شمار کیے جانے والےصابری مالہ میں 10 تا 50 سال کی خواتین کا داخلہ ممنوع تھا  جسے  ماہ ستمبر میں سپریم  کورٹ  نے کالعدم قرار دے دیا تھا

1117601
بھارت، کیرالہ میں 50 لاکھ خواتین کی انسانی زنجیر
hindistan kadin zinciri.jpg

بھارتی صوبے کیرالہ میں تقریباً 50 لاکھ خواتین نے جنسی برابری کے نظریے کو اجاگر کرنے  کے لیے 620 کلو میٹر طویل ایک انسانی زنجیر بنائی۔

بی بی سی کی خبر کے مطابق  کیرالہ کی رہائشی خوتین نے جنسی برابری  کی حمایت میں اس  ملک کے بڑے ترین مندروں میں شامل صابری مالا سے انسانی زنجیر بنانی شروع کی۔

ہندوؤں کے مقدس ترین  مندروں میں شمار کیے جانے والےصابری مالہ میں 10 تا 50 سال کی خواتین کا داخلہ ممنوع تھا  جسے  ماہ ستمبر میں سپریم  کورٹ  نے کالعدم قرار دے دیا تھا۔

خواتین نے عدالتی فیصلے کے باوجود اس  ممانعت کا دفاع کرنےو الےوالوں کی جانب سے خواتین کو  مندر میں جانے سے روکنے  کے خلاف آواز بلند کرنے کے  زیر مقصد احتجاج کا انوکھا طریقہ اپنایا ہے۔

50 لاکھ خواتین نے صوبے کے شمال سے جنوب تک شاہراہوں پر انسانی زنجیر بنا ڈالی۔

واضح رہے کہ ہندو یاتری مذکورہ عمر کی خواتین کو "میلا" تصور کرتے ہیں اور مذہبی رسومات میں ان کی شراکت  پر پابندیاں لگاتے ہیں۔

 

 

 



متعللقہ خبریں