روینگیا مسلمانوں کی نسلی صفائی کی حقیقت اب سب کے سامنے آشکار ہے، کیتھولک پیشوا

میانمار کی وزیر خارجہ اور صدارتی امور کی ذمہ داری وزیر مملکت آونگ سان سو چی فوج کے سامنے اپنی آواز کو بلند کرنے کے معاملے میں آئینی حقوق   کی مالک نہیں ہے

907794
روینگیا مسلمانوں کی نسلی صفائی کی حقیقت اب سب کے سامنے آشکار ہے، کیتھولک پیشوا

 

میانمار کے کیتھولک پیشوا چارلس بو کا  کہنا ہے کہ  روہنگیا  کے مسلمانوں کا رخائن سے راہ ِ فرار اختیار کرنے کے پیچھے  نسلی صفائی   کی حقیقت   اب آشکار ہو چکی ہے۔

انسانی   اسمگلنگ  کے موضوع پر ایک  کانفرس میں شرکت کی غرض سے  واتی کان جانے والے بو نے اسوسیئٹیڈ پریس  سے انٹرویو  میں کہا ہے کہ حکومت ِ میانمار نے روہنگیا والوں کو واپس لانے کے  لیے بعض منصوبے بنائے ہیں تا ہم  میں سمجھتا ہوں کہ ان کی اکثریت  ملک واپسی کے حق  میں نہیں ہو گی جس کی وجہ  سیکورٹی کے خدشات،  ماضی سے چلی آنے والی تفریق بازی اور اقتصادی صورتحال ہے۔

پادری نے اس بات بھی کا بھی دفاع کیا ہے  کہ میانمار کی وزیر خارجہ اور صدارتی امور کی ذمہ داری وزیر مملکت آونگ سان سو چی فوج کے سامنے اپنی آواز کو بلند کرنے کے معاملے میں آئینی حقوق   کی مالک نہیں ہے۔

اقوام متحدہ کے تازہ اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ برس 25 اگست سےابتک  میانمار  میں جارحیت    سے راہ فرار اختیار کرنے والے   رخائن کے 6 لاکھ 55 ہزار مسلمانوں نے بنگلہ دیش میں پناہ لی ہے۔

 



متعللقہ خبریں