روسی صحافی نے یوکرینی مہاجر بچوں کی فلاح کے لئے اپنا نوبل ایوارڈ بیج ڈالا

روسی صحافی دمتری مرادوف نے یوکرینی بچوں کی فلاح پر خرچ کرنے کے لئے اپنا ایوارڈ 103،5 ملین ڈالر میں فروخت کر دیا

1846296
روسی صحافی نے یوکرینی مہاجر بچوں کی فلاح کے لئے اپنا نوبل ایوارڈ بیج ڈالا

2021 کے نوبل  امن ایوارڈ یافتہ روسی صحافی دمتری مرادوف  نے یوکرینی بچوں کی فلاح پر خرچ کرنے کی خاطر اپنا ایوارڈ 103،5 ملین ڈالر میں فروخت کر دیا ہے۔

ہیریٹیج نامی نیلامی گھر نے امریکہ کے شہر نیویارک میں مرادوف کے ایوارڈ کو نیلامی کے لئے پیش کیا۔

103،5 ملین ڈالر میں ایوارڈ کی فروخت کے بعد اخباری نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے مرادوف نے کہا ہے کہ "مجھے ایوارڈ  کی فروخت کے ساتھ بڑے پیمانے پر تعاون کی امید تو تھی لیکن اتنی زیادہ قیمت لگنے  کی توقع نہیں تھی"۔

اطلاع کے مطابق ایوارڈ سے حاصل ہونے والی رقم کو ،اقوام متحدہ کے بچوں   کے  لئے امدادی ادارے، 'یونیسف' کی  وساطت سے یوکرینی مہاجر بچوں کے فلاح کے لئے استعمال کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ روسی صحافی مرادوف  کے ایوارڈ نے 103،5 ملین ڈالر کی قیمت  کے ساتھ 2014 میں جیمز واٹسن کے 4،74 ملین میں فروخت ہونے والے ایوارڈ کو بڑے فرق کے ساتھ پیچھے چھوڑ کر ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

ہیریٹیج نیلامی گھر نے خریدار کے بارے میں معلومات فراہم نہیں کیں۔

مرادوف، 1993 میں قائم ہونے والے روزنامے، نووایا گازیتا کے بانیوں میں سے ہیں۔ نوبل ایوارڈ کمیٹی نے نووایا گازیتا کے لئے جاری کردہ بیان میں کہا تھا کہ "نووایا گازیتا  اس وقت روس کا آزاد ترین اخبار ہے اور اقتدار کے خلاف  تنقیدی موقف اپنائے ہوئے ہے"۔



متعللقہ خبریں