صدر ولادی میر پوتن ڈکٹیٹر ہیں، موجودہ دور کو بھی ایک چارلی چیپلن کی ضرورت ہے: زلنسکی

مجھے یقین ہے کہ ڈکٹیٹر کو شکست ہو گی۔ اس وقت سینما کے بے زبان نہ ہونے کا ثبوت دینے کے لئے ہمیں ایک نئے چیپلن کی ضرورت ہے: صدر ولادی میر زلنسکی

1828662
صدر ولادی میر پوتن ڈکٹیٹر ہیں، موجودہ دور کو بھی ایک چارلی چیپلن کی ضرورت ہے: زلنسکی

یوکرین کے صدر ولادی میر زلنسکی نے کہا ہے کہ روس کے صدر ولادی میر پوتن ڈکٹیٹر ہیں۔

زلنسکی نے فرانس میں کل شام منعقدہ 75 ویں کینز فلم فیسٹیول کی افتتاحی تقریب میں ویڈیو کانفرنس شرکت کی۔

تقریب سے خطاب میں انہوں نے دوسری عالمی جنگ اور اداکار چارلی چیپلن کی 1940 کی فلم "ڈکٹیٹر" کے بارے میں بھی بات کی۔

انہوں نے کہا ہے کہ "اگرچہ چارلی چیپلن کی فلم ڈکٹیٹر نے اُس دور کے ڈکٹیٹر کو قتل نہیں کیا لیکن اس فلم کی بدولت سینما خاموش  فلم کے دور سے نکل آیا۔  اس کے بعد سینما  کو زبان مِل گئی  اور سینما مستقبل کی فتح کی آواز بن گیا"۔

زلنسکی نے کہا ہے کہ " اس دور سے لے کر اب تک انسانیت نے بے شمار فلمیں بنائیں۔  اس  ابتدائی فلم کے بعد ہم خیال کر سکتے تھے کی انسانیت کو جنگ کی دہشت کا دوبارہ سامنا نہیں کرنا پڑے گا لیکن حقیقت یہ ہے کہ اُس دور کی طرح موجودہ دور کا بھی ایک ڈکٹیٹر ہے"۔

زلنسکی نے 24 فروری سے جاری جنگ  کا ذکر کیا اور کہا ہے کہ جن علاقوں میں روسی فوج  داخل ہوئی ہے وہاں کثیر تعداد میں افراد کو قتل کر دیا گیا ہے۔ ان افراد میں 229 بچے بھی شامل ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم جنگ کرنا جاری رکھیں گے۔ اس کے علاوہ اور کوئی راستہ نہیں ہے۔ مجھے یقین ہے کہ ڈکٹیٹر کو شکست ہو گی۔ اس وقت سینما کے بے زبان نہ ہونے کا ثبوت دینے کے لئے ہمیں ایک نئے چیپلن کی ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ 75 واں کینز فلم فیسٹیول یوکرین۔ روس جنگ کے دوران منعقد ہو رہا ہے۔ فیسٹیول میں روسی وفد  کو شرکت کی اجازت نہ دئیے جانے کا تقریب کے آغاز سے قبل اعلان کر دیا گیا تھا۔

یوکرینی عوام کے ساتھ تعاون کے اظہار کے لئے یوکرین کے 2 ہدایتکاروں کی فلموں کی فیسٹیول کے مختلف حصوں میں  اور ،گذشتہ ماہ یوکرین میں ہلاک کئے گئے، لتھوانیا کے ہدایتکار 'مانتاس کویداراویکس'  کی آخری فلم " ماریوپول۔2 " کی خصوصی نمائش کی جائے گی۔



متعللقہ خبریں