"نیکسٹ" بائے ٹی آر ٹی ورلڈ فورم

تقریب  میں ہزاروں افراد کی شرکت ہوئی جس میں  ٹیکنالوجی سے میٹاورس اور این ایف ٹی ورک شاپ سے لے کر خلائی سیاحت تک متعدد موضوعات پر بحث ہوئی

1827112
"نیکسٹ" بائے ٹی آر ٹی ورلڈ فورم

سال 2017 سے اب تک  دنیا کے بیشتر  مسائل  پر  روشنی ڈالنے میں پیش پیش ٹی آر ٹی ورلڈ فورم   کے زیر اہتمام "نیکسٹ  بائے ٹی آر ٹی ورلڈ فورم" کے تحت دنیا کی نامور شخصیات اور متعدد نوجوانوں کی شرکت سے 14مئی کو زورلو پی ایس ایم میں منعقدہوا۔ اس تقریب  میں ہزاروں افراد کی شرکت ہوئی جس میں  ٹیکنالوجی سے میٹاورس اور این ایف ٹی ورک شاپ سے لے کر خلائی سیاحت تک متعدد موضوعات پر بحث ہوئی ۔

ٹی آر ٹی کے ڈاریکٹر جنرل مہمت زاہد سوباجی نے  شرکا  بالخصوص نوجوانوں سے خطاب میں کہا کہ نیکسٹ نوجوانوں اور مستقبل   کو یکجا کرنے  کی خصوصیت  رکھتا ہے، نوجوانوں اور مستقبل کے درمیان ربط کے علاوہ  ایک خصوصی تعریف بھی یہاں شامل کرنا ہوگی اور وہ ہے امید ۔ دراصل   دور حاضر میں دنیا پر نظر ڈالتے ہی مسائل  حاوی نظر آے ہیں جن کے حل کے لیے ہمیں متعدد فیصلے لینے کی ضرورت پڑتی ہے جن میں مدد کےلیے ہمیں نوجوانوں کا ساتھ دینا ہوتاہے۔ لہذا ہم نے نیکسٹ کا انعقاد کرتےہوئے نوجوانوں کی توجہ اس جانب مبذول کروانا چاہی کیونکہ  نوجوانوں کے خمیر میں تخلیق پسندی کا عنصر زیادہ ہوتا ہے۔ان میں خیال  و جدت پسندی،نئے نظریات و افکار کا سمندر ٹھاٹیں مار رہا ہوتا ہے لہذا حل کی تلاش   میں اگر ہم  درپیش مسائل سے نمٹنے کے اگر ہم ان نوجوانوں کی مدد نہیں لیں گے تو مشکل ہو گی  اس وجہ سے ہماری خواہش  تھی کہ ایک ایسا پروگرام تشکیل دیا جائے  جو کہ  نئی نوجوان نسل کو گزشتہ  نسلوں کے مقابلے میں آج کی جدید ٹیکنالوجی  کے استعمال  سے  زیادہ مفید اور   کارآمد   اور دورس نتائج سامنے لانے میں معاونت کرے۔ٹی آر ٹی ورلڈ فورم کے تحت ہم نے  نوجوانوں کو اس پروگرام کا حصہ بنانا چاہا تھا۔

 اس تقریب میں  دنیا کے پہلے میٹا ورس  ایجنسی کے بانیوں میں شامل جان یورداگل،فیصل برطانیہ۔سارہ الجملا اور بیگم آئدن اولو نے بھی پیاورس سے متعلق پینل میں شرکت کی اور شرکا کو اس کے بارے میں آگا ہ کیا۔

ماحولیاتی تغیر کے معاملے میں  کرہ ارض کی آواز بنو،نوجوانوں بیدار ہو جاو  نامی پینل سے سے خطاب میں نوجوان ماحولیاتی تحریک پسند ژیا باسٹیدا   نے شرکا  سے خطاب میں کہا کہ ہمییں نوجوانوں کو خوف میں مبتلا نہیں کرنا ہوگا، ہمیں دنیا کو بچانا ہوگا، اسی پینل سے خطاب میں شامل  نیشاد شفیع نے  کہا کہ یہاں میری موجودگی کا مقصد عرب نوجوانوں کو  عالمی تغیر کے بارے میں  اجاگر کرنا ہے۔ یہ ایک عالمی مسئلہ ہے  مگر میڈیا بعض اوقات اسے صرف مغرب کا مسئلہ ہی گردانتا ہے۔

 اس کے علاوہ پینل میں خصوصی خطابات،ورک شاپس کا اہتمام اور ویژوئل    تقریبات کا بھِ اہتمام کیا  گیا  جس میں نوجوانوں نے نیکسٹ   بائے ٹی آر ٹی ورلڈ فورم  کے ذریعے  ملکی و غیر ملکی اداروں سے تعاون کی اہمیت کو بھی جاننے کی کوشش کی ۔

 

 



متعللقہ خبریں