41 خواتین  کے مجسموں اور تصاویر پر مشتمل منی ایچر نمائش کا آغاز ہو گیا

منی ایچر میں تین براعظموں پر حکمدار سلطنت عثمانی کی 41 خواتین کی شبیہوں کو نمائش کیا گیا ہے

687246
41 خواتین  کے مجسموں اور تصاویر پر مشتمل منی ایچر نمائش کا آغاز ہو گیا
meclis'te osmanlı kadınları sergisi.jpg

ترکی کی وزارت ثقافت  کی فنکارہ نورتن اُنور اور ان کے شاگردوں  کے زیر اہتمام 41 خواتین  کے مجسموں  اور تصاویر پر مشتمل منی ایچر نمائش کا آغاز ہو گیا ہے۔

نمائش کا اہتمام ترکی کی قومی اسمبلی کے مصطفیٰ نجاتی ثقافتی مرکز میں کیا گیا ہے اور اس میں دورِ عثمانی کی نامور خواتین کی تصاویر بھی رکھی گئی ہیں۔

اس موقع پر اُنور نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ منی ایچر اپنے اندر بہت سی تفصیلات کا احاطہ کرنے والا فن ہے ۔ منی ایچر میں تین براعظموں پر حکمدار سلطنت عثمانی کی 41 خواتین کی شبیہوں کو نمائش کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ منی ایچر کے ساتھ زائرین بہت دلچسپی لے رہے ہیں اور 2000 کے سال منی ایچر فن کے سنہری دور کی حیثیت رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ خاص طور پر خواتین اس فن کے ساتھ بہت دلچسپی لے رہی ہیں۔

نمائش 12 مارچ تک جاری رہے گی۔



متعللقہ خبریں