روسی حملوں پر بہت شور مچایا جا رہا ہے لیکن یہ شور شرابہ روسی فوج کو روک نہیں سکے گا: پوتن

یوکرین کی کاروائیوں پر ہر طرف مکمل خاموشی چھائی رہی لیکن جب ہم نے جوابی کاروائی کی ہے تو ہر طرف شور مچ گیا ہے: صدر ولادی میر پوتن

1916601
روسی حملوں پر بہت شور مچایا جا رہا ہے لیکن یہ شور شرابہ روسی فوج کو روک نہیں سکے گا: پوتن

روس کے صدر ولادی میر پوتن نے کہا ہے کہ یوکرین کے انرجی انفراسٹرکچر پر روسی حملوں پر بہت شور مچایا جا رہا ہے۔

کریملن پیلس میں "وطن کے ہیرو" نامی پروگرام سے خطاب میں صدر پوتن نے  تمغوں کے حقدار روسی فوجیوں کے ساتھ ملاقات کی۔

تقریب سے خطاب میں انہوں نے روس  کے یوکرین پر میزائل حملوں کا ذکر کیا اور   کہا ہے کہ "ہمسایہ ملک پر ہمارے میزائل حملوں پر بہت شور مچایا جا رہا ہے۔ جی بالکل ٹھیک ہے ہم یہ حملے کر رہے ہیں"۔

پوتن نے کہا ہے کہ مذکورہ حملے یوکرینی فوج کے روس مخالف اقدامات کے جواب میں شروع کئے گئے ہیں۔ لیکن پہلے کس نے شروع کیا ہے؟ کریمیا پُل پر کس نے حملہ کیا ہے؟ کس نے کرسک جوہری پاور پلانٹ  کی الیکٹرک لائنوں کو نشانہ بنایا ہے اور کس نے دونیتسک  کا پانی کاٹا ہے؟

پوتن نے کہا ہے کہ لاکھوں کی آبادی والے شہر کا پانی کاٹنا نسل کشی ہے لیکن کہیں سے بھی کسی نے بھی اس بارے میں ایک لفظ تک نہیں کہا۔ ہر طرف مکمل خاموشی چھائی رہی لیکن جب ہم نے جوابی کاروائی کی ہے تو ہر طرف شور مچ گیا ہے۔

پوتن نے کہا ہے کہ یہ شور شرابہ روسی فوج  کو، یوکرین میں اپنے اہداف تک رسائی سے، روک نہیں سکے گا۔ وطن کا  اوّلین  مفہوم انسان ہیں۔ اسے ہمیشہ یاد رکھنا چاہیے۔  ہم جو بھی کر رہے ہیں اپنے عوام اور ان کی سلامتی کے لئے کر رہے ہیں"۔



متعللقہ خبریں