ہونڈرس نے قومی ہنگامی حالات کا اعلان کر دیا

صدر کاسٹرو کے احکامات پر 600 سے زائد لاء اینڈ آرڈر فوجی اور پولیس اہلکاروں  کو بطور کمک  سرحدی چوکیوں کی طرف روانہ کر دیا گیا

1912220
ہونڈرس نے قومی ہنگامی حالات کا اعلان کر دیا

وسطی امریکہ کے ملک ہونڈرس میں بڑھتے ہوئے جرائم کی وجہ قومی ہنگامی حالات کا اعلان کر دیا  گیا ہے۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق ہونڈرس کے صدر سیومارا کاسٹرو نے ملک میں منشیات کی اسمگلنگ، کرائے کے قتل اور غیر قانونی کاروائیوں کے سدّباب کے لئے قومی ہنگامی حالات کے نفاذ کا اعلان کر دیا ہے۔

ہونڈرس صدارتی ترجمان دفتر نے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ "سرحدی علاقوں میں سینکڑوں کی تعداد میں سکیورٹی فورسز متعین کر دی گئی ہیں۔ صدر کاسٹرو کے احکامات پر اور جامع سکیورٹی پلان کے دائرہ کار میں 600 سے زائد لاء اینڈ آرڈر فوجی اور پولیس اہلکاروں  کو بطور کمک  سرحدی چوکیوں کی طرف روانہ کر دیا گیا ہے"۔

ہمسایہ ممالک السلواڈور، گوئٹے مالا اور نکاراگوا سے ہونڈرس میں داخلے و خروج کو سختی سے کنٹرول کیا جا رہا ہے۔

علاوہ ازیں جرائم کی بلند ترین شرح کی وجہ سے' ٹیگل سی گالپا' اور 'سین پیدرو ساول'  کے 100 سے زائد محلّوں میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ ہونڈرس اپنے جغرافیے کے بلند ترین شرح جُرم والے ممالک میں شامل ہے۔

قتل، اغوا، تاوان اور بھتہ جیسے واقعات کی وجہ سے عوام حکام سے حل کا مطالبہ کر رہے ہیں۔


ٹیگز: #ہونڈرس

متعللقہ خبریں