سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بنگلے سے برآمد کردہ خفیہ دستاویز امریکی ایجنڈے میں سر فہرست

وفاقی عدالت نے سرچ وارنٹ پر لگی مہر ہٹا کر دستاویزات کے ٹائٹل عوام کے سامنے آشکار کردیے

1867349
سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بنگلے سے  برآمد کردہ خفیہ دستاویز امریکی ایجنڈے میں سر فہرست

متحدہ امریکہ کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بنگلے پر 8 اگست کو مارے گئے چھاپے نے ملکی ایجنڈے پر اپنی مہر ثبت کی ہے ۔

ٹرمپ کے فلوریڈا  میں بنگلے پر ایف بی آئی کے چھاپے کے دوران بھاری تعداد میں دستاویز کو تحویل میں لے لیا گیا۔

ٹرمپ اور ان کے حمایتیوں نے   اس چھاپے کے سیاسی جواز کے ساتھ کی گئی تفتیش کے نتیجے میں کیے جانے کا مورد الزام ٹہرائے گئے ایف بی آئی کے خلاف رد عمل کا مظاہرہ کیا ہے۔

اس کے بعد امریکی محکمہ انصاف نے میامی کی وفاقی عدالت سے ضبط شدہ دستاویزات پر مہر ہٹانے کی درخواست کی۔

وفاقی عدالت نے سرچ وارنٹ پر لگی مہر ہٹا کر دستاویزات کے ٹائٹل عوام کے سامنے آشکار کردیے۔

اعلان کیا گیا ہے کہ ٹرمپ کے گھر سے ضبط کی گئی دستاویزات میں بہت سی دستاویزات ایسی ہیں جن میں سیکرٹ اور ٹاپ سیکرٹ کی عبارتیں درج ہیں۔

ضبط کردہ دستاویز کی  فہرست   26  فائلوں پر مشتمل ہے۔

شائع شدہ سرچ وارنٹ کی تفصیلات میں کہا گیا ہے کہ تین مختلف وفاقی قوانین کی ممکنہ خلاف ورزیوں پر تحقیقات کی جارہی ہیں۔

ان میں "جاسوسی ایکٹ" کے تحت دفاعی معلومات کوجمع کرنا، ترسیل اور نقصان شامل ہے۔

دستاویز میں بعض صدارتی ریکارڈز کی موجودگی بھی قابل توجہ ہے تو  قومی سلامتی کے جواز میں مذکورہ دستاویز کے  مواد  سے عوام کو آگاہی نہیں کرائی گئی۔

 

 



متعللقہ خبریں