نائجیریا، بوکو حرام تنظیم کے 28 کارندے غیر فعال بنا دیے گئے

بوکو حرام اب بھی افریقہ کے سب سے زیادہ آبادی والے ملک نائجیریا میں سیکیورٹی کا ایک سنگین مسئلہ ہے

1864822
نائجیریا، بوکو حرام تنظیم کے 28 کارندے غیر فعال بنا دیے گئے

نائجیریا  کے شمال مشرق میں  دہشت گرد تنظیم بوکو حرام  کے خلاف کاروائی میں 28 دہشت گردوں کو غیر فعال بنا دیا گیا ۔

قومی  پریس کی خبروں  کے مطابق فوج نے   بورنو صوبے سے منسلک گووزا علاقے میں بوکو حرام  کے خلاف بری اور فضائی  کاروائی کی۔

ان کاروائیوں میں  تنظیم کے سرغنہ سمیت  الا حاجی  مودو سمیت  28 دہشت گردوں کو  ناکارہ بنا دیا گیا ، بھاری  تعداد میں دہشت گرد  زخمی حالت میں فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔

حالیہ برسوں میں کی جانے والی کارروائیوں کے باوجود، بوکو حرام اب بھی افریقہ کے سب سے زیادہ آبادی والے ملک نائجیریا میں سیکیورٹی کا ایک سنگین مسئلہ ہے۔

بوکو حرام، جو 2000 کی دہائی کے اوائل سے نائجیریا میں سرگرم ہے کے  2009 سے اب تک دہشت گرد حملوں میں 20  ہزار سے زائد افراد  اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔

دہشت گرد تنظیم نے 2015 سے ملک کے سرحدی پڑوسی ممالک کیمرون، چاڈ اور نائیجر میں بھی حملے کیے ہیں۔ جھیل چاڈ  کے علاقے میں تنظیم کے حملوں میں کم از کم 2000 افراد  موت کے منہ میں گئے ہیں۔

دہشت گردانہ حملوں اور تنازعات کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کو ملک سے ہجرت کرنا پڑی۔

 

 



متعللقہ خبریں