ان خوفناک قتل وارداتوں پر میں نہایت غم و غصّے میں ہوں: بائیڈن

اس نوعیت کے نفرت انگیز حملوں کے لئے امریکہ میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ میں مسلم کمیونٹی کے ساتھ بھرپور تعاون کا اظہار کرتا ہوں: صدر جو بائیڈن

1865069
ان خوفناک قتل وارداتوں پر میں نہایت غم و غصّے میں ہوں: بائیڈن

امریکہ کے صدرجو بائیڈن نے ریاست نیو میکسیکو  کے شہر  البکرکی میں مسلمانوں کے قتل سے متعلق جاری کردہ بیان میں مسلم کمیونٹی کے ساتھ اتحاد کا پیغام دیا ہے۔

انہوں نے ٹویٹر سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ "ان خوفناک قتل وارداتوں پر میں نہایت غم و غصّے میں ہوں۔ اس نوعیت کے نفرت انگیز حملوں کے لئے امریکہ میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ میں مسلم کمیونٹی کے ساتھ بھرپور تعاون کا اظہار کرتا ہوں"۔

یاد رہے کہ امریکہ میں قتل ہونے والے 4 مسلمانوں کے بارے میں ترکی وزارت خارجہ کے جاری کردہ بیان میں " واقعے کو مکمل تفصیلات کے ساتھ منظر عام پر لانے کے لئے  امریکی حکام سے  ہرطرح کی تحقیقی و تفتیشی کاروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا"۔

البکرکی پولیس ڈپارٹمنٹ سے کیل ہارٹسوک نے بھی 4 اگست کو منعقدہ پریس کانفرنس میں، مسلمان کمیونٹی میں اندیشوں کا سبب بننے والی، قتل وارداتوں کے بارے میں بریفنگ دی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ بہت ممکن ہے کہ حالیہ 9 ماہ کے دوران قتل ہونے والے مسلمانوں کو ایک ہی قاتل یا قاتلوں نے قتل کیا ہو۔

ہارٹسوک نے کہا تھا کہ ہو سکتا ہے کہ مقتولین کو مسلمان برادری کا حصہ ہونے کی وجہ سے نشانہ بنایا گیا ہو۔ ہمارے تفتیشی افسران کے قوی   احتمال کے مطابق مقتولین کو نسلی و دینی بنیادوں پر قتل کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ مقتولین میں سے ہر ایک کو گھات لگا کر قتل کیا گیا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کے قاتل اپنے شکار کا گھات  میں انتظار کرتا ہے۔

واضح رہے کہ البکرکی میں ماہِ نومبر میں 62 سالہ محمد احمد  کی لاش ہلال گوشت مارکیٹ کے عقبی پارکنگ ایریا سے ملی تھی۔ 26 جولائی کو 41 سالہ آفتاب حسین کو اپارٹمنٹ کے پارکنگ ایریا میں گولی مار کر قتل کر دیا گیا، یکم اگست کو 27 سالہ محمد افضال حسین کو  نیو میکسیکو یونیورسٹی کے راستے میں  ہلاک کر دیا گیا اور 6 اگست کو البکرکی میں ایک اور مسلمان کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا۔



متعللقہ خبریں