کرہ ارض اس وقت اپنی تاریخ کی سنگین ترین فاقہ کشی کا شکار ہے، انتونیو گوٹریس

یوکرین  کی جنگ ، برسوں سے  منظر عام پر آنے والا آب و ہوا کا بگاڑ، اور کورونا  وبا  نے اس مسئلے کو   مزید پیچیدہ  بنا دیا ہے

1848076
کرہ ارض اس وقت اپنی تاریخ کی سنگین ترین فاقہ کشی کا شکار ہے، انتونیو گوٹریس

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل  انتونیو گوٹریس  کا کہنا ہے کہ  اسوقت ہماری دنیا  کو  بے مثال سطح پر  عالمی فاقہ  کشی کا سامنا ہے ۔

جرمنی میں "عالمی خوراک کے تحفظ کے لیے متعدد چیلنجز کا جواب " کے زیر عنوان   منعقدہ وزارتی کانفرنس کو ایک ویڈیو پیغام بھیجتے ہوئے گوٹیرس نے کہا،"ہمیں  فاقہ کشی کے ایک بے مثال عالمی بحران کا سامنا ہے۔ یوکرین  کی جنگ ، برسوں سے  منظر عام پر آنے والا آب و ہوا کا بگاڑ، اور کورونا  وبا  نے اس مسئلے کو   مزید پیچیدہ  بنا دیا ہے۔

انہوں نےبتایا کہ ہارن آف افریقہ کے خطے میں حالیہ برسوں میں بدترین خشک سالی کا سامنا کرنا پڑا ہے، اگر ابھی  بھی کوئی قدم نہ  اٹھایا گیا  تو  یہ صورتحال  کسی آفت کی ماہیت  اختیار کر  سکتی ہے۔"ورلڈ فوڈ پروگرام کے مطابق، گزشتہ دو سالوں میں، دنیا بھر میں غذائی قلت کے شکار افراد کی تعداد دوگنا سے بھی تجاوز کرتے ہوئے  276 ملین ہو گئی ہے۔ 2022 میں قحط کے اعلانات کا  سنگین  خطرہ موجود ہے اور 2023 اس سے بھی بدتر ہو سکتا ہے۔ "

سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیریس نے کہا کہ دنیا کو درپیش خوراک کے بحران کے حل کے لیے ضروری ہے کہ جنگ کے باوجود روس کی جانب سے تیار کردہ خوراک اور کھاد کو عالمی منڈیوں میں دوبارہ شامل کیا جائے۔ میں اس حوالے سے  یوکرین، روس ، ترکی، متحدہ امریکہ، یورپی یونین اور دیگر  ممالک کے ساتھ مسلسل  رابطے میں ہوں۔"



متعللقہ خبریں