ترکی کے جائز تحفظات دور کیے جائیں، نیٹو سیکرٹری جنرل

نیٹو میں سویڈن اور فن لینڈ کی شرکت سے اجتماعی سلامتی میں اضافہ ہو گا

1831801
ترکی کے جائز تحفظات دور کیے جائیں، نیٹو سیکرٹری  جنرل

نیٹو کے سیکرٹری جنرل  ینز اسٹولٹن برگ   کا کہنا ہے کہ  ترکی   دہشت گرد حملوں سے سب سے زیادہ متاثر   نیٹو کا رکن ہے ، اس بنا پر   اس کے نئے ارکان کے حوالے سے  تحفظات کو دور کرنے  کے لیے حل چارہ تلاش کیا جانا چاہیے۔

اسٹولٹن برگ نے ورلڈ اکنامک فورم (WEF) سے خطاب کیا، جسے ڈیووس، سوئٹزرلینڈ میں منعقدہ "ڈیس سمٹ" کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

انہوں نے بتایا  کہ نیٹو میں سویڈن اور فن لینڈ کی شرکت سے اجتماعی سلامتی میں اضافہ ہو گا، جینز سٹولٹن برگ نے کہا کہ اس سے یورپی یونین نیٹو ب روابط کو بھی تقویت ملے گی۔

انہوں نے یاد دہانی کرائی  کہ روس اپنی سرحدوں پر نیٹو کے مزید ارکان نہیں چاہتا، اس نے نیٹو کو الٹی میٹم بھیجا اور ایک پابند معاہدے کا مطالبہ کیا ہے:

"وہ اپنی سرحدوں پر نیٹو کو کم دیکھنا چاہتا تھا اور جنگ شروع کر دی تھی۔ اب وہ اپنی سرحدوں پر زیادہ نیٹو دیکھ رہا ہے۔ نیٹو کی رکنیت کے لیے سویڈن اور فن لینڈ کی درخواستیں تاریخی اہمیت کی حامل ہیں۔ میں ترکی کی طرف سے اٹھائے گئے خدشات کو دور کرنے کی اہمیت سے بھی آگاہ ہوں۔ ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ نیٹو کا کوئی اتحادی دہشت گردانہ حملوں سے محفوظ نہیں ہے۔ "ترکی سے  زیادہ  نقصان کسی کو نہیں  پہنچا  اور کسی دوسرے اتحادی نے ترکی سے زیادہ مہاجرین کی میزبانی نہیں کی ہے۔ اس لیے ہمیں بیٹھ کر آگے بڑھنے کا راستہ تلاش کرنا ہوگا۔ مجھے یقین ہے۔ ہم ایسا کریں گے۔"

اسٹولٹن برگ نے یہ بھی اظہار کیا کہ ترکی نے کئی سالوں سے امریکہ، کینیڈا اور انگلینڈ کے ساتھ مل کر یوکرین کی حمایت کی ہے۔



متعللقہ خبریں