ہم نیٹو رکنیت کے معاملے میں ترکی کے خدشات کو دور کرنے پر متفق ہیں، سویڈش اور فنش سربراہان

نیٹو کی رکنیت کے لیے امریکہ کا دورہ کرنے والے فنش اور سویڈش سربراہان کی پریس کانفرس

1829575
ہم نیٹو  رکنیت کے معاملے میں ترکی کے خدشات کو دور کرنے پر متفق ہیں، سویڈش اور فنش سربراہان

فنش  صدر ساولی نی انیستو اور سویڈش  وزیر اعظم  میگدیلینا انڈرسن  نے   نیٹو کی رکنیت کے معاملے میں  ترکی کے  ساتھ مل کر کام کرنے کی وضاحت کرتے  وقت    ترکی کے سیکیورٹی خدشات  کو دور کرنے کے معاملے میں  مطابقت قائم  کرنے کا ذکر کیا ہے۔

امریکہ کے فن لینڈ اور سویڈن کی نیٹو رکنیت   کی حمایت کرنے  کا ذکر کرتے ہوئے صدر جو بائڈن  کا کہنا ہے کہ   نیٹو میں شرکت کرنے والے  نئے ممالک   کبھی بھی کسی دوسرے ملک  کے  لیے خطرہ  تشکیل نہیں دیتے۔

امریکی صدر جو بائڈن نے  فن لینڈ کے صدر   اور سویڈن کے  وزیر اعظم  اینڈرسن  نے  وائٹ ہاوس میں  سر انجام پانے والے سہہ رکنی  اجلاس  کے بعد  پریس کانفرس کا اہتمام کرتے ہوئے کہا کہ   ہم  ان ممالک کی نیٹو میں شمولیت کی حمایت کرتے ہیں۔  

فنش صدر نی انیستو  نے     نیٹو  کے لیے مشترکہ  ضمانت کے معاملے میں  خدمات ادا کرنے کے لیے تیار ہونے   کی  توضیح کرتے ہوئے کہا کہ "ہم تمام تر نیٹو اتحادی ممالک کی  جانب سے ہماری رکنیت کی منظوری میں بھر پور  تعاون کی توقع کرتے ہیں۔"

انہوں نے   اس بات کی یاد دہانی کرائی کہ  ترکی  ہماری  رکنیت کے معاملے میں بعض خدشات رکھتا ہے ،   فن لینڈ نے ہمیشہ ترکی کے ساتھ  باعث فخر اور دو طرفہ اچھے تعلقات  قائم  کیے  ہیں۔  ہم  نیٹو کے اتحادی کی حیثیت سے  ترکی کے سلامتی خدشات کو دور کرنے کے معاملے میں ہم خیال  ہیں۔  ہم  دہشت گردی کو سنجیدہ لیتے ہیں  اور ہر طرح کی دہشت گردی کی   مذمت کرتے ہیں۔  ہماری رکنیت کے بارے میں  آپ کے ذہنوں میں پیدا ہونے والے تمام تر   خدشات کو دور کرنے کے لیے تیار ہیں۔ اس معاملے پر ترکی کے ساتھ بات چیت کر رہے ہیں، اور یہ مذاکرات آنے والے دنوں میں جاری رہیں گے۔

سویڈن کے وزیر اعظم اینڈرسن نے بھی کہا کہ ان کی شرکت سے نیٹو مزید مضبوطی   بنے گا۔"ہم ہر قسم کے مسائل کے حل کے لیے ترکی سمیت نیٹو کے تمام رکن ممالک کے ساتھ مختلف سطحوں پر بات چیت کر رہے ہیں۔"



متعللقہ خبریں