بائیڈن کی کورونا ویکسین پالیسی عدالت نے مسترد کردی

نیو آرلینز کی وفاقی عدالت  نے یہ فیصلہ اسٹے گروپ آف بزنسز ، مذہبی گروہوں اور مختلف ریاستوں کی جانب سے دائر  درخواست پر دیا اور بائیڈن انتظامیہ سے پیر تک اس حوالے سے مؤقف بھی طلب کر لیا ہے

1730317
بائیڈن کی کورونا ویکسین پالیسی عدالت نے مسترد کردی

امریکی عدالت نے بائیڈن  انتظامیہ کی بڑی کمپنیوں کے ملازمین پر کورونا ویکسین لازمی لگوانے کی پابندی  عارضی طورپر معطل کر دی۔

نیو آرلینز کی وفاقی عدالت  نے یہ فیصلہ اسٹے گروپ آف بزنسز ، مذہبی گروہوں اور مختلف ریاستوں کی جانب سے دائر  درخواست پر دیا اور بائیڈن انتظامیہ سے پیر تک اس حوالے سے مؤقف بھی طلب کر لیا ہے۔

حکومتی اقدام کے خلاف درخواست دائر کرنے والوں میں 5 ری پبلکن اکثریتی ریاستیں  ٹیکساس، لوز انیا، جنوبی کیرولینا،یوٹاہ اور مسی سپی شامل ہیں۔

خیال رہے کہ بائیڈن انتظامیہ  100 سے زائد ملازمین کی حامل کمپنیوں پر  پابندی لگانا چاہتی ہےکہ وہ کورونا ویکسین لازمی طورپر لگوائیں تاکہ ملک میں لاکھوں افراد ویکسین لگواسکیں۔

تاہم عدالت نے  بائیڈن انتظامیہ کی بڑی کمپنیوں کے ملازمین پر کورونا ویکسین لازمی لگوانے کی پابندی عارضی طورپر معطل کر دی اور  اسٹے آرڈر جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس معاملےمیں آئینی مسائل ہیں، مزیدکارروائی تک اس پرعمل معطل رہےگا



متعللقہ خبریں