اقوام متحدہ، فلسطینی انسانی حقوق سے متعلقہ تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینا باعث تشویش ہے

تنظیموں اور اس کے کارکنان کے برخلاف کسی  قسم کی مداخلت نہ  کرنے کی اپیل

1723848
اقوام متحدہ، فلسطینی انسانی حقوق  سے متعلقہ تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینا باعث تشویش ہے

اقوام متحدہ نے اسرائیل کی جانب سے 6 فلسطینی انسانی حقوق تنظیموں کو دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں  شامل کیے جانے پر اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے۔

اقوام متحدہ کے اعلی کمیشن برائے  انسانی حقوق  کی جانب سے اس موضوع سے متعلق جاری کردہ تحریری اعلامیہ میں  واضح کیا گیا ہے کہ ’’انسداد دہشت گردی کے  معاملات کو جائز انسانی حقوق اور انسانی  امور کی کاروائیو ں کو محدود کرنے   کےلیے استعمال نہیں کیا جانا چاہیے۔‘‘

اعلامیہ میں  اسرائیل کو منظم ہونے اور آزادی اظہارِ خیال  کا احترام کرنے،  مذکورہ  تنظیموں اور اس کے کارکنان کے برخلاف کسی  قسم کی مداخلت نہ  کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

دوسری جانب جنیوا میں قائم Euro-Mediterranean Human Rights Organization) کی جانب سے ایک تحریری بیان میں اس بات کی نشاندہی کی گئی کہ اسرائیل فلسطینی علاقوں میں انسانی حقوق کی کاروائیوں میں رکاوٹیں ڈالتا ہے۔

تنظیم نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ اسرائیل پر دباؤ ڈالے کہ وہ فلسطینی علاقوں میں ہونے والی خلاف ورزیوں پر تنقید کرنے والی آوازوں کو دبانے کی اپنی پالیسی ختم کرے۔

فلسطینی وزیراعظم محمد اشتیہ نے بھی اس موضوع پراپنے بیان میں کہا ہےکہ اسرائیل کا فیصلہ بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے جسے ہم  سختی سے  مسترد کرتے ہیں۔

اسرائیلی یروشلم پوسٹ کی خبر کے مطابق، اسرائیلی وزارت انصاف نے ، ضمیر قیدیوں کے تحفظ کے ادارے، قانون الحق فار ہیومن رائٹس، بسان ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ سینٹر، صمدون فلسطینی قیدیوں کے دفاعی نیٹ ورک، زرعی مزدور کمیٹیوں کی یونین اور  انٹرنیشنل چائلڈ رائٹس ڈیفنس موومنٹ نے غیر قانونی قرار دیا تھا۔



متعللقہ خبریں