صرف 5 ممالک کے پاس ویٹو کا حق ہونا عالمی عدم مساوات کی زندہ مثال ہے

آنتونیو گوتریس:  کشمیر سمیت ہر جگہ بنیادی انسانی حقوق کا احترام ہونا چاہیے

صرف 5 ممالک کے پاس ویٹو کا حق ہونا عالمی عدم مساوات کی زندہ مثال ہے

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیوگوتریس  کا کہنا ہےکہ صرف 5 ممالک کا  سلامتی کونسل میں  ویٹو  کے حق کا مالک ہونا  ہماری  دنیا میں عدم مساوات کی ایک  مثال تشکیل دیتا  ہے  جبکہ کشمیر سمیت ہر جگہ بنیادی انسانی حقوق کا احترام ہونا چاہیے۔

سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ انتونیوگوتریس نے لاہور میں لمز یونیورسٹی میں طلبا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عالمی سطح پر بھی ملکوں میں مساوات نہیں ہے جس کی مثال یہ ہے کہ سلامتی کونسل کے صرف پانچ ممالک کے پاس ویٹو  کی طاقت  ہے، افراد اور ممالک  میں مساوات قائم کرنا  ایک آسان نہیں کام نہیں  بلکہ ایک طویل عمل ہے۔

انہوں نے بتایا  کہ عصرِ حاضر  کا سب سے بڑا مسئلہ ماحولیاتی آلودگی ہے جسے سامنے رکھتے ہوئے فیصلے کرنے ہوں گے، پلاسٹک تھیلے  زمین کی   زرخیزی میں گراوٹ  اور سمندری آلودگی کا  موجب ہیں، ہم  ایک بار  استعمال ہونے والی پلاسٹک مصنوعات  پر پابندی کےلئے کوششیں صرف کر رہے ہیں۔



متعللقہ خبریں