امریکہ کا اعتراف: PYD/PKK کے دہشت گرد دیگر علاقوں سے عفرین میں منتقل ہو گئے ہیں

شام میں امریکہ کی زیر حمایت اور 'شامی ڈیموکریٹک فورسز'  کا نام استعمال کرنے والی علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم PYD/PKK کے دہشت گردوں کا ایک حصہ دیگر علاقوں سے عفرین میں منتقل ہو گیا ہے: جِم میٹس

908512
امریکہ کا اعتراف:  PYD/PKK کے دہشت گرد دیگر علاقوں سے عفرین میں منتقل ہو گئے ہیں

امریکہ کے وزیر دفاع جِم میٹس نے اعتراف کیا ہے کہ شام میں امریکہ کی زیر حمایت اور 'شامی ڈیموکریٹک فورسز'  کا نام استعمال کرنے والی علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم PYD/PKK کے دہشت گردوں کا ایک حصہ دیگر علاقوں سے عفرین میں منتقل ہو گیا ہے۔

میٹس نے اپنے دورہ یورپ کے دوران اخباری نمائندوں کے لئے دہشت گرد تنظیم داعش کے خلاف جدوجہد کے موضوع پر بیان جاری کیا۔

شام میں داعش کے خلاف جدوجہد جاری ہونے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عفرین کے آپریشنوں کی وجہ سے   PYD/PKKکی زیر قیادت بنائی گئی شامی ڈیموکریٹک فورسز میں شامل بعض عناصر  کی توجہ منتشر ہو گئی ہے اور وہ اس علاقے میں پہنچ گئے ہیں۔

جِم میٹس نے مزید کہا کہ اس وقت عفرین میں جاری اور توجہ منتشر کرنے والی ایک صورتحال موجود ہے۔ یہ صورتحال شامی ڈیموکریٹک فورسز کے اندر متعدد اراکین کی توجہ کو منتشر کر رہی ہے ۔ وہ اپنے ساتھیوں کو عفرین میں حملوں کا نشانہ بنتے دیکھ رہے ہیں اور یہ چیز انہیں اس علاقے کی طرف مائل کر رہی ہے۔ بعض حالات میں بعض یونٹیں عفرین منتقل ہو گئی ہیں۔

میٹس نے مزید کہا ہے کہ علاقے میں ترکی واحد ملک ہے کہ جس کی سرحدوں کے اندر "مسلح بغاوت " جاری ہے۔ شامی سرحدوں کے بارے میں ترکی کے جائز اندیشوں کا ہم ذرہ برابر انکار نہیں کر رہے ۔

انہوں نے کہا کہ خواہ اسرائیل ہو، لبنان ہو، اردن ہو یا پھر ترکی  ہو جائز اندیشوں کے شکار ان ممالک کے اندیشوں کو ہم سمجھ رہے ہیں۔

واضح رہے کہ پینٹاگون نے اس سے قبل شامی ڈیموکریٹک فورسز کے بعض عناصر  کے علاقہ تبدیل کرنے کا ذکر کیا تھا تاہم اس صورتحال کی پہلی دفعہ سرکاری طور پر تصدیق کی گئی ہے۔



متعللقہ خبریں