امریکی وزیر دفاع کی ترک وزیر دفاع سے ملاقات

ترکی   کو  نہ صرف PKK  بلکہ  شامی سرحدوں پر اسد کے موجب بننے والی   جنگ کے منفی اثرات   پیدا ہونے  کے خدشات لا حق  ہیں

907033
امریکی وزیر دفاع کی  ترک وزیر دفاع سے ملاقات

متحدہ امریکہ کے وزیر دفاع  جم ماتھیس  نے  اعلان کیا ہے کہ آئندہ ہفتے  بیلجیم کے نیٹو سربراہی   اجلاس کے دائرہ کار میں وہ  قومی وزیر  دفاع  نورالدین جانیک لی  سے  ملاقات کریں گے۔

ماتھیس نے پریس   رُوم میں جاتے ہوئے صحافیوں سے بات چیت کی۔

اس ترکی   کے شامی علاقے  منبچ میں  دہشت گرد تنظیم پی وائے ڈی/PKK  کے وجود  کے حوالے سے خدشات  پر ایک سوال کے  جواب میں  ماتھیس نے بتایا کہ "منبچ  کے معاملے  میں  ترکی کے دباؤ  کے   اعتبار سے کوئی  تبدیلی نہیں آئی۔  انقرہ کے بیانات   کے حوالے سے ہمارے کئی ایک خدشات پائے جاتے ہیں اب  ہمارا ہدف  داعش  پر دباؤ ڈالنا اور داعش  مخالف  کاروائیوں کو جاری  رکھوانا ہے۔  اس بنا پر ہم ان کی توجہ  کے منتشر ہونے پر  اندیشے   رکھتے ہیں۔"

ترکی کے مشروع  خدشات پائے جانے کی وضاحت کرنے والے ماتھیس  نے بتایا کہ ترکی کے ساتھ  اعلی ترین  سیاسی  سطح سے لیکر فوجی سطح تک مشترکہ کاروائیوں پر عمل کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے  مندرجہ ذیل الفاظ صرف کیے:"ترکی نیٹو کا ایک اتحادی ہے اور یہ اپنی سرحدوں کے اندر دہشت گرد تنظیم PKK  کی فعال  کاروائیوں کے خلاف نبردِ آزما نیٹو کا واحد رکن ہے۔ ا س معاملے میں ہم ترکی کے ہمراہ  کام کر رہے ہیں۔  ترکی   کو  نہ صرف PKK  بلکہ  شامی سرحدوں پر اسد کے موجب بننے والی   جنگ کے منفی اثرات   پیدا ہونے  کے خدشات لا حق  ہیں۔ میں آئندہ ہفتے    اس موضوع پر  ترک ہم  منصب    سے   بیلجیم کے دارالحکومت   برسلز میں مذاکرات کروں گا۔ "



متعللقہ خبریں