ہم ایک امید کے ساتھ مستقبل کی طرف دیکھ رہے ہیں: صدر جون مانوئیل سانٹوس

فائر بندی کیتھولک  فرقے کے روحانی پیشوا اور ویٹیکن کے صدر پوپ فرانسس  کے دورہ کولمبیا سے پہلے طے پائی ہے اور اس حوالے سے پوپ ہماری تاریخ کے ایک بے مثال دور میں  کولمیبیا کا دورہ کر رہے ہیں۔ صدر جون مانوئیل سانٹوس

801123
ہم ایک امید کے ساتھ مستقبل کی طرف دیکھ رہے ہیں: صدر جون مانوئیل سانٹوس

کولمیبیا کی حکومت اور نیشنل لبریشن فورسز ELN کے درمیان فائر بندی کا سمجھوتہ طے پا گیا ہے۔

سمجھوتہ ایکواڈور کے دارالحکومت کیوٹو میں طے پایا کہ جہاں کولمبیا کی حکومت اور ELN  کے درمیان ماہِ فروری سے لے کر اب تک مذاکرات جاری تھے۔

کولمیبیا کے صدر جون مانوئیل سانٹوس  نے ٹیلی ویژن پر قوم سے خطاب میں کہا  ہےکہ فائر بندی کیتھولک  فرقے کے روحانی پیشوا اور ویٹیکن کے صدر پوپ فرانسس  کے دورہ کولمبیا سے پہلے طے پائی ہے اور اس حوالے سے پوپ ہماری تاریخ کے ایک بے مثال دور میں  کولمیبیا کا دورہ کر رہے ہیں۔

صدر مانوئیل سانٹوس نے کہا کہ عجیب و غریب جھڑپوں کے دور کو بند کر کے ہم ایک امید کے ساتھ مستقبل کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس فائر بندی کے دوران پیٹرول پائپ لائنوں پر حملے ، اغوا اور شہریوں پر دیگر حملوں کا خاتمہ ہو جائے گا۔

حکومت  کے تنظیم کے ساتھ مذاکرات  میں حکومتی چیف نگوشئیٹر  جون  کامیلو ریسٹریپو  نے بھی کہا ہے کہ یہ سمجھوتہ حتمی امن  کے فروغ کے لئے بھی ایک اوّلین قدم کی حیثیت رکھتا ہے۔

فائر بندی کے دائرہ کار میں ELN نے انفراسٹرکچر پر حملے کرنے اور  بچوں کو اغوا کر کے تنظیم کے اراکین میں اضافہ کرنے جیسے اقدامات کو التوا میں ڈالنے کو قبول کر لیا ہے۔

کولمبیا کی حکومت نے بھی تنظیم کے  حالیہ دور میں حملوں کا نشانہ بننے والے  سوشل لیڈروں کو تحفظ میں لینے ، ELN کے اراکین کو انسانی امداد فراہم کرنے اور بعض حفاظتی اقدامات کرنے کے موضوع پر اتفاق رائے کر لیا ہے۔

فائر بندی کا سمجھوتہ یکم اکتوبر کو نافذ العمل ہو گا اور 12 جنوری 2018 تک جاری رہے گا۔

فریقین کے درمیان سمجھوتہ طے پانے کی صورت میں فائر بندی کے دورانیے میں توسیع کی جائے گی۔

سمجھوتے کی، غیر جانبدار مبصرین، اقوام متحدہ  اور کیتھولک  کلیسا کی طرف سے تصدیق کی جائے گی۔

واضح رہے کہ ELN کو حکومت کے ساتھ سمجھوتہ کرنے والے آخری باغی گروپ کی حیثیت حاصل ہے۔

کولمبیا اور تقریباً ایک ہزار 500 اراکین پر مشتمل ELN کے درمیان مذاکرات ایکواڈور ، چلی، کیوبا، وینزویلا، ناروے اور برازیل  کی مانیٹرنگ اور ثالثی میں جاری ہیں۔

اڑتالیس ملین سے زائد آبادی والے لاطینی امریکہ کے ملک کولمبیا میں نصف صدی سے زائد عرصے سے جاری جھڑپوں میں 2 لاکھ 60 ہزار سے زائد افراد ہلاک  اور 6 ملین سے زائد افراد ہجرت پر مجبور ہو چکے ہیں۔



متعللقہ خبریں