ڈنمارک: اسکارف نہ اتارنے کی سزا بے روزگاری اور بے روزگاری الاونس سے محرومی

ڈنمارک میں سر ڈانپنے والی بے روزگار خواتین  انہیں روزگار فراہم کرنے والوں کی طلب پر اسکارف اتارنے پر مجبور ہوں گی

697037
ڈنمارک: اسکارف نہ اتارنے کی سزا بے روزگاری اور بے روزگاری الاونس سے محرومی

نام نہاد آزادیوں کے علمبردار یورپ میں اسلام دشمنی کی وجہ سے لاگو پابندیوں میں ہر گزرتے دن کے ساتھ ایک اور کا اضافہ کر رہا ہے۔

ڈنمارک میں سر ڈانپنے والی بے روزگار خواتین  انہیں روزگار فراہم کرنے والوں کی طلب پر اسکارف اتارنے پر مجبور ہوں گی۔

اسکارف اتارنے سے انکار  کی صورت میں مذکورہ خاتون کو نہ صرف ملازمت سے نکال دیا جائے گا بلکہ بے روزگاری الاونس بھی ادا نہیں کیا جائے گا۔

ملک میں 2 بڑے شہروں  کی بلدیہ  میں  اسکارف اتارنے سے انکار کرنے والوں  کو ملازمت سے بے دخل کرنے کے ساتھ ساتھ بے روزگاری الاونس  کاٹنے کو عملی طور پر نافذ کر دیا  گیا ہے۔

واضح رہے کہ ڈنمارک کے قانونِ محنت کی رُو سے بے روزگار افراد انہیں مجوّزہ کام کو یہ دیکھے بغیر کہ وہ کام ان کے لئے موزوں ہے یا نہیں قبول کرنے پر مجبور ہیں۔

یورپی یونین کے عدالتی دیوان نے 14 مارچ کو کئے گئے فیصلے کے ساتھ رکن ممالک کے آجرین کو  یہ حق دیا تھا کہ وہ، ملازمین  کے کسی قسم کے سیاسی ، فلسفیانہ  یا پھر دینی علامت  کو اپنے ساتھ رکھنے کو ممنوع قرار دے سکتے ہیں۔



متعللقہ خبریں