ہم یونان میں بغاوت کرنےو الوں کو ترکی میں پناہ نہ دیتے، ترک وزیر خارجہ

میولود  چاوش اولو  اور یونانی ہم منصب نکوس کوچیاس  یونان کے  ازمیر میں   مرمت  کردہ قونصل خانے کی عمارت کے افتتاح کے موقع پر یکجا ہوئے

ہم یونان میں بغاوت کرنےو الوں کو ترکی میں پناہ نہ دیتے، ترک وزیر خارجہ

وزیر خارجہ میولود چاوش اولو کا کہنا ہے کہ ترکی اور یونان  کے درمیان   گاہے بگاہے تناؤ  کا ماحول  پیدا ہونے کے باوجود ہم ڈائیلاگ  کو حل کی راہ کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

میولود  چاوش اولو  اور یونانی ہم منصب نکوس کوچیاس  یونان کے  ازمیر میں   مرمت  کردہ قونصل خانے کی عمارت کے افتتاح کے موقع پر یکجا ہوئے۔

دونوں وزراء نے یہاں پر مشترکہ  پریس کانفرس سے خطاب   کیا۔

اس موقع پر ترک وزیر نے کہا کہ ترکی اور یونان ایک ہی محل و وقوع اور ماضی کے حامل ممالک ہیں، ہم  دو عظیم تہذیبوں کے نمائندے ہیں۔ دونوں ملکوں میں لا تعداد ثقافتی ورثے موجود ہیں،  ہماری زبانوں کے 5 ہزار الفاظ مشترک ہیں، یہ تمام عوامل دونوں عوام کے درمیان قربت پیدا کرتے ہیں۔ اس کے ساتھ ہمارے درمیان بعض اوقات  نظریاتی  اختلافات  سامنے آتے رہتے ہیں جن کو مذاکرات کے ذریعے کیا جانا ممکن ہے ۔

انہوں نے 15 جولائی 2016 کے ناکام بغاوت  اقدام  میں ملوث  بعض اشخاص کے یونان میں پناہ لینے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر ایسی چیز یونان میں ہوتی تو ہم قصور وار افراد کو ہرگز ترکی میں پناہ نہ دیتے۔

دوسری جانب یونانی وزیر نے   ترکی میں  بغاوت اقدام کے معاملے میں ترکی کے شانہ بشانہ ہونے کا دعوی کیا۔


 



متعللقہ خبریں