امریکہ کے دہشت گردوں سے متعلق معلومات فراہم کرنے پر ایوارڈ نوازنے پر ترکی کا محتاط رویہ

صدر رجب طیب ایردوان نے امریکہ کی جانب سے  دہشت گردوں  کے بارے میں معلومات فراہم کرنے والوں کو ایوارڈ سے نوازنے  سے متعلق بیان پر محتاط  رویے  کا اظہار  کیا ہے

امریکہ کے  دہشت گردوں  سے متعلق معلومات فراہم کرنے پر ایوارڈ نوازنے پر ترکی کا محتاط رویہ

صدارتی ترجمان  ابراہیم قالن نے کہا ہے کہ   امریکہ کی جا نب سے       دہشت گرد تنظیم  پی کے کے تین   سرغناوں  کے بارے میں معلومات  فراہم کرنے  والوں کو ایوارد سے نوانے پر بڑے محتاط ہیں۔

انہوں نے   امریکہ  کی جانب سے مرات قارا یلان، جمیل  بائیق اور  دوران  کالکان  کی شناخت اور ان کا پتہ بتانے والوں کو   رقوم کی شکل میں  انعام  دیے جانے کے بارے میں جائزہ پیش کیا۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ کے ایوارڈ جارے کرنے کے بیان پر ہم محتاط ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  وہ  وائی پی  جی اور  پی وائی ڈی کو  پی کے کے سے الگ رکھنے پر تلے ہوئے ہیں ۔ ایسا کرکے   ہمیں  دھوکہ نہیں دیا جاسکتا۔ ان سب کے پیچھے دہشت گرد تنظیم پی کے کے ہی کا ہاتھ ہے ۔

انہوں نے   امریکہکے ساتھ شام کے منبیج  علاقے سے متعلق  روڈ میپ  کا تمام پہلووں سے  جائزہ لیتے ہوئے تیار کیا گیا ہے  اور اس پر عمل درآمد سے متعلق  ترکی پوری طرح پر عظم ہے۔

اس روڈ میپ کے ذریعے  علاقے کو  پی کے کے/ پی وائی ڈی/ وائی پی جی  سے  پاک کرتے ہوئے   اس کے حقیقی  واثوں کے حوالے کردیا جائے گا۔

امریکہ کے    یورپ اور  یوریشیا کے امور  کے سیکرٹری  میتھیو  پالمر  نے     مرات قارا یلان( پانچ ملین ڈالر )، جمیل  بائیق(4 ملین ڈالر) اور  دوران  کالکان(  3 ملین ڈالر)کی شناخت اور ان کا پتہ بتانے والوں کو   رقوم کی شکل میں  انعام  دیے جانے کا اعلان کیا ہے۔

پالمر  نے کہا کہ امریکی وزارتِ  خارجہ نے  1997 میں   پی کے کے غیر ملکی  دہہشت گرد تنظیم  اور 2001 میں اسے بین الاقوامی دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا گیا تھا۔



متعللقہ خبریں