ترکی اورپاکستان جغرافیائی لحاظ سے دورہیں لیکن ثقافت اورروایات نےایک دوسرےسےجوڑ رکھا ہے: پاک ائیرچیف

ائیرچیف مارشل جاہد انور خان نے کہا ہے کہ جیو پالیٹک اورجیواسٹریٹجیک حالات کے لحاظ  سے  پاکستان اور ترکی   دونوں ہی   ایک دوسرے سے    ملتے جلتے مسائل سے نبرد آزما ہیں

ترکی اورپاکستان جغرافیائی لحاظ سے دورہیں لیکن ثقافت اورروایات نےایک دوسرےسےجوڑ رکھا ہے: پاک ائیرچیف

پاک فضائیہ  کے ائیر چیف مارشل   مجاہد انور خان  نے کہا ہے کہ ترکی اور پاکستان دونوں ہی   دفاعی شعبے میں تعاون  کو فروغ دینے کی صلاحیتوں کے مالک ہیں۔

انہوں نے اپنے دورہ ترکی کے موقع پر ترکی  اور  پاکستان کے درمیان   عسکری شعبے  میں  تعاون سے متعلق اپنا جائزہ  پیش کیا۔

انہوں نے کہا کہ انہیں ترکی کا دورہ کرکے بڑی خوشی  محسوس ہوئی ہے اور وہ  دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید   فروغ دینے   کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ترکی اور پاکستان   اگرچہ جغرافیائی لحاظ سے ایک دوسرے سے دور ہیں  لیکن  ان دونوں ممالک کو ثقافت اور روایات نے ایک دوسرے سے جوڑ رکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جیو پالیٹک  اور جیو اسٹریٹجیک  حالات کے لحاظ  سے  پاکستان اور ترکی   دونوں ہی   ایک دوسرے سے    ملتے جلتے مسائل سے نبرد آزما ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  ترک عوام نے ہمیشہ ہی پاکستان کے تمام مسائل میں پاکستان کی کھل کر حمایت کی ہے اور ترکی نے  ہمیشہ ہی پاکستان کے مشکل حالات میں پاکستان کا بھر پور  ساتھ دیا ہے جس پر ہم ترکی کے مشکور ہیں۔

 

ائیر  چیف مارشل  مجاہد خان نے کہا کہ    بری،  بحری اور فضائیہ،   فوج کے ان شعبوں میں  ترکی اور پاکستان ایک دوسرے  سے مکمل طور پر  تعاون کو جاری رکھے ہوئے ہیں  اور دونوں ممالک ایک دوسرے کے دفاعی معاملات میں بہت کچھ مشترکہ طور پر کرنے کی صلاحیتوں کے مالک ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  پاکستان کو  دہشت گردی کے خلاف  جنگ میں    بہت قربانیاں دینی پڑی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان  کو جان کی قربانیوں     کے علاوہ  اقتصادی لحاظ سے  ایک سو بلین ڈالر کا نقصان بھی اٹھانا پڑا ہے  ۔ انہوں نے کہا کہ  ہم اپنے ہمساِیہ  ممالک کے ساتھ پُرامن زندگی بسر کرنے کے خواہاں ہیں  اور اس مقصد کے لیے  علاقے میں امن کے قیام کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں اور پاکستان نے علاقے میں امن کے قیام کی خاطر بڑے اقدامات بھی اٹھائے ہیں ۔ ہم ایک پُر امن افغانستان کے خواہاں ہیں  جو پاکستان  کے اپنے مفاد میں ہے۔

 انہوں نے  کہا کہ کل انہیں پاکستان    اور ترکی کے درمیان دفاعی تعاون کو مزید فروغ دینے  میں ان کی خدمات کے اعتراف کے طور ترک حکومت کی طرف سے اعلی ترین ملٹری ایوارڈ "لیجن آف میرٹ"سے نوازا گیا۔

انہوں نے کہا کہ   ترکی اور پاکستان  30 عدد  T129 اتاک ہیلی   کاپٹروں   کی خریداری سے متعلق   13 جولائی    کو ایک  معائدے پر دستخط کیے گئے ہیں ۔ یہ معائدہ   ترکی کی تاریخ میں  ایک ہی   باراتنی  بڑی مقدار میں دفاعی  برآمدات کرنے والے معائدے  کی وجہ سے  بڑی اہمیت کا حامل ہے۔



متعللقہ خبریں