امریکہ نے منبج سے 90 دن میں دہشت گردوں کے انخلاء کا عندیہ دیا ہے، ترک وزیر اعظم

ہم اپنے ہمسائے کے خلاف جنگ میں امریکہ کا ساتھ دیں گا اس چیز کا سوچا بھی نہیں جا سکتا

امریکہ نے منبج سے 90 دن میں دہشت گردوں کے انخلاء کا عندیہ دیا ہے، ترک وزیر اعظم

وزیر اعظم بن علی یلدرم نے ترکی اور امریکہ کے درمیان مطابقت طے پانے والے شام میں منبج روڈ میپ کے حوالے  سے کہا ہے کہ 90 روز کے اندر وہاں سے دہشت گرد تنظیم پی وائے ڈی، وائے پی جی کے عناصر کااخراج ہو جائیگا۔

وزیر اعظم یلدرم نے یو ٹیوب چینل بابالہ ٹی وی پر ایجنڈے کے حوالے سے سوالات کا جواب دیا۔

انہوں نے واضح کیا کہ  مذکورہ معاہدے کی بدولت  دہشت گرد تنظیم  تین ماہ کے اندر اندر علاقے سے انخلاء کر جائیگی اور شہر کا کنڑول مقامی انتظامیہ سنبھال لے گی۔ یہ  پیش رفت ترکی  کی مصمم کوششوں سے  سامنے آئی ہے۔

انسداد دہشت گردی  میں دریائے فرات کا چاہے مشرق  ہو یا مغرب   ہمارے لیے اہم نہیں۔ کیونکہ جب  ہمارے پرچم ، سرزمین، قوم اور عوام کو خطرات درپیش ہوتے ہیں تو پھر ہم کسی کا لحاظ نہیں کرتے۔  ماضی کے تجربات  کا جائزہ لینے سے  اس حوالے سے تدبیر اختیار کرنا منطقی  فعل ہے۔ اوباما انتظامیہ نے بھی ہمیں دہشت گردوں کے انخلاء کا عندیہ دیا تھا لیکن  اس وعدے کی پاسداری نہ کی گئی۔ اب ہم نے  اس معاہدے کو تحریری شکل دی ہے ، جس پر فریقین نے دستخط کرتے ہوئے اپنی اپنی رضا مندی کو برملا اظہار کر دیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اگر امریکہ کہتا ہے کہ میں ایران پر حملہ کروں  گا اور اس کے لیے  ترکی کے انجیرلک فوجی اڈے کو استعمال کروں گا۔ کیا ہم اس چیز کی اجازت دیں گے؟  اس اڈے کوصرف اور صرف دہشت گردوں کے خلاف جنگ کے لیے استعمال کی اجازت دی گئی ہے۔  کسی ملک پر حملے کے لیے اسے قطعی طور پر استعمال کرنے کی اجازت ہر گز نہیں دی جا سکتی۔ ہم اپنے ہمسائے کے خلاف جنگ  میں امریکہ کا  ساتھ دیں گا اس چیز کا  سوچا بھی نہیں جا سکتا۔

 



متعللقہ خبریں