پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان کو ترک فضائیہ کی جانب سے "نشانِ لیاقت" کا اعزاز

پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان جیسے ہی ترک فضائیہ کے ہیڈ کوارٹر پہنچے  تو ترک ائیر چیف عابدین اونال نے ان کا استقبال کیا اور  گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔  دونون ممالک کی فضائی کے سربراہ نے  اس موقع پر تفصیلی بات چیت کی

پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان کو ترک فضائیہ کی جانب سے "نشانِ لیاقت" کا اعزاز

پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان  جو ان دنوں ترکی کے دورے پر ہیں کل ترک فضائیہ کے ہیڈ  کوراٹر  میں منعقد ہونے والی تقریب میں  دونوں ممالک  کی مسلح افواج کے  درمیان تعاون  کو فروغ دینے  اور  مختلف  مشترکہ منصوبوں کو شروع کرنےکے اعتراف  کے طور پر" نشانِ لیاقت"Legion of Merit سے نوازہ گیا۔

پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان جیسے ہی ترک فضائیہ کے ہیڈ کوارٹر پہنچے  تو ترک ائیر چیف عابدین اونال نے ان کا استقبال کیا اور  گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔  دونون ممالک کی فضائی کے سربراہ نے  اس موقع پر تفصیلی بات چیت کی اور دونوں ممالک کی فضائیہ کے درمیان تعاون کے مختلف منصوبوں  پر غور کیا۔

بعد میں پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان  کو "نشان لیاقت"  دینے کی تقریب  کا اہتمام کیا گیا۔اس  تقریب  میں  سب سے پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان  کےحالات زندگی پر روشنی ڈالی گئی ۔ اس موقع پر ترک  فضائیہ  کے سربراہ  ائیر چیف مارشل عابدین اونال خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ترکی اور پاکستان  کے  تعلقات  دنیا کے لیے ایک مثال کی حیثیت رکھتے ہیں ۔  دونوں ممالک کے درمیان یہ تعلقات ماضی  سے چلے آرہے ہیں  اور وقت کے ساتھ ساتھ ان تعلقات میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ان تعلقات کو فروغ دینے میں دونوں ممالک کے عوام اور خاص طور پر افواج نے بڑا اہم کردارا ادا کیا۔ دونوں ممالک  کی افواج  ایک دوسرے سے قریبی تعاون  کرتے ہوئے کئی ایک  پراجیکٹ  کو پایہ تکمیل تک پہنچا رہی ہیں۔   انہوں نے کہا کہ دونوں  ممالک کسی قسم کے مفاد   کا خیال رکھے بغیر ایک دوسرے سے گہرا تعاون کررہے ہیں جبکہ دنیا میں اس وقت مفاد پر دوستی کی جا رہی ہے اور یہی وجہ ہے کہ یہ دوستی مضبوط بنیادوں پر استوار ہے۔

اپنی تقریر کے بعد ترک فضائیہ  کے سربراہ ائیر چیف مارشل عابدین اونال  نے پاکستان کی فضائیہ کے سربراہ   ایئر چیف مارشل سہیل امان  کو" نشانِ لیاقت"  سے نوازہ  اور  سرٹیفیکٹ پیش کیا۔

" نشانِ لیاقت"   حاصل کرنے کے بعد  پاکستان کی فضائیہ کے سربراہ   ایئر چیف مارشل سہیل امان نے  خطاب کرتے ہوئے سب سے پہلے ان کو دیے جانے والے " نشانِ لیاقت" پر  ترکی کی مسلح افواج کا شکریہ ادا کیا  اور کہا کہ یہ ان کے لیے ایک ایسا اعزاز ہے  جس  کا وہ زندگی بھر احترام کرتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان  یہ تعلقات   ایک اس نہج پر پہنچ چلے ہیں  جہاں پر دیگر ممالک کا پہنچنا ممکن نہیں ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان یہ تعلقات  وقت کے ساتھ ساتھ فروغ پاتے رہیں گے۔ ہم جس طریقے سے ترکی کی 15 جولائی اور دیگر مشکلات میں ترکی کے شانہ بشانہ کھڑے  ہیں بالکل  اسی طرح ترکی نے ہمارا ہر مشکل میں ساتھ دیا ہے۔  ہمیں ترکی کی دوستی پر فخر ہے۔ اس وقت ترکی کو  شام   کے ساتھ ملنے والی سرحدوں  پر دہشت گرد ی کا سامنا  ہے۔  ترکی نے دہشت گردی کے خاتمے کے لی فرات ڈھال  کے نام سے جو فوجی آپریشن شروع کررکھا ہے ہم اس کی  مکمل حمایت کرتے ہیں اور ترکی   کو ہر طرح کا تعاون فراہم کرنے کے لیے تیار ہیں۔

اس سے قبل پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان   ایک اعلیٰ سطحی وفد کے قائد کی حیثیت سے اتوار کو ترکی پہنچے  تھے۔

استنبول میں تھوڑی دیر قیام کے بعد   انقرہ پہنچے  جہاں پر سفیر پاکستان سہیل محمود ترک فضائیہ کے حکام نے ان کا استقبال کیا اتوار کی شام کو سفیرپاکستان نے ان کے اعزاز میں عشائیہ دیا۔

سوموار  کو پاکستان کے چیف آف ایئر سٹاف ائیر چیف مارشل سہیل امان اپنی مصروفیات کا آغاز اتاترک کے مزار پر حاضری سے کیا   اور مزار پرمنعقد ہونے والی  تقریب  میں پھول  چڑھائے۔

 



متعللقہ خبریں