عالمی معیشت44

گیس اور دیگر وسائل توانائی کا مرکز ترکی

عالمی  معیشت44

یورپ میں مصروف بروگل    نامی ایک  گروپ  نے یورپی یونین اور ترکی کے درمیان توانائی  پر مبنی تعاون  کےلیے  نئی حکمت عملی کے زیر عنوان ایک رپورٹ جاری کی  جس میں   ترکی۔یورپی یونین  تعلقات  کے فروغ کے حوالے سے اہم  منصوبوں  اور  تعاون   کی نئی راہوں کو متعین کرنے پر زور دیا گیا ہے ۔  ترکی    کا محل وقوع مشرق وسطی اور  بحیرہ قزوین کے  قریب پایا جاتاہے جو کہ یورپ کی توانائی کی ضروریات پوری کرنے میں کلیدی کردار رکھتا ہے۔

  ترکی  کا  جغرافیائی محل وقوع   ایشیائے کوچک اور یورپ کے درمیان  واقع ہے   جو کہ   توانائی کی ضروریات پوری کرنے میں   بالخصوص  گیس کی  ترسیل میں  روز بروز اپنی اہمیت کو اجاگر کرنے میں مصروف ہےجو کہ  اس کی اقتصادی ترقی کےلیے بھی ضروری ہے ۔

 اس سلسلے میں تاناپ اور ترک فلو گیس پائپ لائن  جیسے منصوبوں  میں ترکی  یورپ کو گیس کی فراہمی  میں ایک مرکزی حیثیت رکھتا ہے  جس  میں اضافے  کےلیے بھی  اس رپورٹ میں بعض   ترجیحاتی  تجاویز  شامل ہیں۔ امکان ہے کہ   تاناپ اور ترک فلو گیس  منصوبوں کی تکمیل  کے بعد   طلب توانائی    میں 2٫48 فیصد کا اضافہ ممکن ہو سکے گا۔

 علاوہ ازیں  اس رپورٹ میں  ایک دیگر اہم موضوع  ترکی اور یورپ   کے درمیان قابل تجدید توانائی  اور اس سے متعلقہ شعبوں  کی ترویج  میں تعاون  کو بھی بڑھانے کا حوالہ دیا گیا ہے  جس کےلیے  یورپی سرمایہ کاری بینک، یورپی کمیشن اور یورپی ترقیاتی بینک جیسے اداروں کی طرف سے مالی اعانت  بھی قابل ذکر ہے ۔

 ترکی   اس وقت  یورپ کے ساتھ  ہائیڈرولک،جیو تھرمل،   پن   اور  شمسی توانائی    سے وابستہ  قابل تجدید  توانائی  کے حامل منصوبوں  کےلیے   ایک جامع حکمت  عملی  کو مرتب  دینے  کا  اراد ہ  بھی  رکھتا ہے ۔  ترکی  قابل تجدید توانائی کے حصول میں کافی سنجیدہ ہے   جس کا ثبوت  سال رواں       مارچ کے مہینے میں   شمسی توانائی     کی تنصیب کےلیے   ملک میں  ٹھیکے  کا اعلان کیا گیا جس کے بعد گزشتہ اگست میں  پن توانائی کےلیے بھی ایک اہم ٹھیکے  کا اعلان  ہوا ۔

 ترکی میں قابل تجدید توانائی  کے منصوبوں   کی تکمیل کےلیے    ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں    کی  توجہ کا بھی یہاں ذکر کرنا ضروری ہے  بالخصوص یورپی سرمایہ کار   اس سلسلے میں  کافی متجسس نظر آتے ہیں جس کی مثال ایک جرمن کمپنی ہے جس نے  حال ہی میں   پن توانائی کےلیے تعاون کی پیشکش کی ہے ۔

رپورٹ میں علاوہ ازیں    یورپی یونین اور  ترکی  کے درمیان جوہری توانائی کے حصول  میں تعاون   کا بھی ذکر کیا گیا ہے  جس کی تازہ مثال  اق قویو  جوہری تنصیب  اور  سنوپ میں قائم کیے جانے والے  جوہری پلانٹ    کےلیے  تعاون     کے امکانات کا  جائزہ لینا ہے ۔

 لہذا   یہ کہنا  ضروری ہوگا کہ دور حاضر  کے بعض منصوبوں   میں   ترکی اور یورپی یونین کے درمیان تعاون  کے فروغ  اور اس کی استعداد میں اضافے کا عمل شروع  ہو چکا ہے۔

 

 



متعللقہ خبریں