فلورینس طوفان کی شدت میں کمی مگر تباہیوں کا خطرہ برقرار

امریکہ کی جنوب مشرقی ساحلی ریاستوں کے نزدیک بحرِ اوقیانوس میں بننے والے طوفان 'فلورینس' کی شدت کم ہوگئی ہے لیکن حکام نے خبردار کیا ہے کہ طوفان اب بھی ساحلی علاقوں میں بڑے پیمانے پر تباہی پھیلا سکتا ہے

فلورینس طوفان کی شدت میں کمی مگر تباہیوں کا خطرہ  برقرار

امریکہ کی جنوب مشرقی ساحلی ریاستوں کے نزدیک بحرِ اوقیانوس میں بننے والے طوفان 'فلورینس' کی شدت کم ہوگئی ہے لیکن حکام نے خبردار کیا ہے کہ طوفان اب بھی ساحلی علاقوں میں بڑے پیمانے پر تباہی پھیلا سکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق، طوفان کے زیرِ اثر چلنے والی ہواؤں کی شدت 225 کلومیٹر فی گھنٹہ سے کم ہو کر 175 کلومیٹر فی گھنٹہ ہوگئی ہے جس کے بعد اس کی شدت اب درجہ سوئم سے دوئم کردی گئی ہے۔

حکام نے کہا ہے کہ ساحلی علاقوں سے ٹکرانے سے قبل طوفان کی شدت میں مزید کمی آنے کا امکان ہے لیکن طوفان کی شدت میں کمی آنے کے باوجود اس کا حجم بڑھ رہا ہے۔

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ طوفان کا حجم بڑھنے کے باعث امکان ہے کہ اس کے اثرات زیادہ دیر تک رہیں گے جس کے باعث ساحلی علاقوں سے بلند سمندری لہریں ٹکرانے اور دیر تک طوفانی بارشیں ہونے کا خدشہ ہے۔

بتایا گیا ہے کہ یہ طوفان بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب شمالی کیرولائنا کے ساحلی قصبے وِلمنگٹن سے 455 کلومیٹر مشرق میں تھا جو شمال مغرب کی جانب 28 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے بڑھ رہا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت طوفان کے نتیجے میں جنم لینے والی کسی بھی طرح کی صورتِ حال سے نمٹنے کے لیے پوری طرح تیار ہےلیکن ساتھ ہی انہوں نے طوفان کے راستے میں آنے والے علاقوں کے رہائشیوں سے کہا ہے کہ وہ طوفان کو مذاق نہ سمجھیں اور فوراً محفوظ مقامات پر منتقل ہوں۔

 

 



متعللقہ خبریں