ایران کا نوبل انعام "نشان مصطفی" ایک ترک کے نام،5 لاکھ ڈالر انعام بھی ملے گا

ایران کے مصطفی  ايوارڈ کی  سائنسی وركشاپ كے چيئرمين حسن ظہور نے كہا كہ دو ايرانی  اور ترك سائنسدانوں محمد امين شكرالہی  اور سامی ایرول گلبني' کو نشان مصطفی  عطا کیا جائے گا۔

ایران کا نوبل انعام "نشان مصطفی" ایک ترک کے نام،5 لاکھ ڈالر انعام بھی ملے گا

مصطفی ایوارڈ کے سائنس، مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی گروپ کے چیئرمین نے کہا ہے کہ اس ایوارڈ کی اعلی صلاحیتوں کی وجہ سے مستقبل قریب  میں یہ اعزاز، عالم اسلام کے نوبل انعام کے طور پر متعارف کرایا جائے گا.
يہ بات حميدرضا ربيعي نے نشان مصطفی  كے دوسرے دور سے متعلقہ ايك منعقدہ پريس كانفرنس ميں خطاب كرتے ہوئے كہي.
انہوں نے كہا كہ يہ ايوارڈ  جامعات  اور اسلامی دنیا  كے معتبر اداروں پر مشتمل ايك پالیسی  ساز  كونسل كا حامل ہے لہذا يہ ايك بين الاقوامی سرگرمی ہے ۔
ربيعي نے كہا كہ اس ايوارڈ كے سيكرٹريٹ كو بھيجے جانے والے كاموں کا بين الاقوامی سطح پر مطالعہ اور عالم  اسلام كے سب تجربات كا استعمال كيا جا رہا ہے.
ياد رہے كہ مصطفی  ايوارڈ کی  سائنسی وركشاپ كے چيئرمين حسن ظہور نے كہا كہ دو ايرانی  اور ترك سائنسدانوں محمد امين شكرالہی  اور سامی ایرول گلبني' کو نشان مصطفی  عطا کیا جائے گا۔
تفصيلات كے مطابق،  اس ايوارڈ كو عطا كرنے كا مقصد مختلف  رجحانات پر سائنسی واقعات كا جائزہ لينا،  اسلامی دنیا ميں معروف سائنسدانوں مشہور اسلامی خصوصيات كی تعريف كرنا اور سائنسی  تعاون كے راستوں كی  سہولتيں فراہم كرنا ہے.
نشان مصطفی اسلامی دنيا  کی  سائنس اور ٹيكنالوجی كا سب سے بڑا اعزاز ہے جو ہر دوسال ميں اسلامی دنيا كے بہترين سائنسدانوں اور علماء كو عطا كيا جاتا ہے.



متعللقہ خبریں