جو لیڈر حالات کے تقاضے کے مطابق یو ٹرن نہیں لیتا وہ بے وقوف ہوتا ہے

کرپشن کے الزامات کا سامنا کرنے والے ایک  شخص کو پی اے سی کی چیئرمین شپ  نہیں دے سکتے

جو لیڈر حالات کے تقاضے کے مطابق یو ٹرن نہیں لیتا وہ بے وقوف ہوتا ہے

وزیر اعظم پاکستان عمران خان  کا کہنا  ہے کہ حالات کے مطابق یوٹرن نہ لینے  والا لیڈر کامیاب لیڈر تصور نہیں کیا جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ یہ سب کو علم ہے کہ  تاریخ میں نپولین اور ہٹلر نے یوٹرن نہ لینے کی وجہ سے تاریخی شکست کھائی  ، جو یوٹرن لینا نہیں جانتا،اس سے بڑا بے وقوف لیڈر نہیں، یہ بھی بتایا چلوں کہ  نوازشریف نے عدالت میں یوٹرن نہیں لیا بلکہ جھوٹ بولا تھا۔

وزیراعظم نےبتایا  کہ قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو کسی صورت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) کا چیئرمین نہیں بنائیں گے،کرپشن کے الزامات کا سامنا کرنے والے ایک  شخص کو پی اے سی کی چیئرمین شپ  نہیں دے سکتے۔

عمران خان نے قومی احتساب بیورو کی کارکردگی پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ احتساب قوانین میں ترمیم کی ضرورت ہے، نیب چھوٹے چھوٹے مقدمات میں الجھ چکا ہے، جس سے اس کی کارکردگی متاثر ہو رہی ہے، نیب کو چاہیے کہ چھوٹے مقدمات کی بجائے بڑے مگر مچھوں پر ہاٹھ ڈالے۔

دورہ چین  کے حوالے سے بات کرتے ہوئے  وزیر اعظم نے کہا کہ یہ دورہ  توقعات سے زیادہ کامیاب رہا، جس کے دور رس نتائج  سامنے آئیں گے لیکن ہم  چین کے ساتھ  طے  وعدوں کی تفصیل عام نہیں کرسکتے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ چین کی امداد سے پاکستان کی ادائیگیوں کا توازن بہتر ہوگا، چین سے ہر قسم کی امداد مل رہی ہے، جس سے تجارت و سرمایہ کاری بڑھے گی۔

انہوں نے کہا کہ بیرون ملک جائیدادوں کے انکشاف کے ساتھ ہی حزب اختلاف  کی نکتہ چینیوں میں تیزی آ گئی ہے، تاہم ہم  قوم سے لوٹی ہوئی دولت کی وطن واپسی کے لیے مختلف ممالک سے معاہدے کر رہے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلوں پر من و عن عمل درآمد کیا جائے گا جبکہ سیرت النبی ﷺ کانفرنس بھرپور طریقے سے منعقد کی جائے گی اور اس کانفرنس کے افتتاحی سیشن کی صدارت میں خود کروں گا۔

انہوں نے بتایا کہ کانفرنس کے اختتامی سیشن میں صدر مملکت شریک ہوں گے، اس کے علاوہ دنیا بھر سے اسلامی اسکالرز اور علماء بھی شرکت کریں گے، اس کانفرنس کے ذریےع اسلام مخالف بیانیے کا موثر جواب دیا جائے گا۔

 

 



متعللقہ خبریں