وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں 21 نکاتی ایجنڈے پر غور

اجلاس میں موجودہ حکومت کے فیصلوں پرعملدرآمد سے متعلق رپورٹ کا جائزہ لیا جائے گا۔ اجلاس میں ایجنڈے کے تحت برطانیہ اور آئرلینڈ سے قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے کی منظوری دی جائے گی، لبرٹی ایئر لائن کے لیے کلاس ٹو کے چارٹر لائسنس کی منظوری بھی لی جائے گی

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں 21 نکاتی ایجنڈے پر غور

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس جاری ہے، جس کے دوران 21 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا جارہا ہے۔اجلاس میں موجودہ حکومت کے فیصلوں پرعملدرآمد سے متعلق رپورٹ کا جائزہ لیا جائے گا۔

اجلاس میں ایجنڈے کے تحت برطانیہ اور آئرلینڈ سے قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے کی منظوری دی جائے گی، لبرٹی ایئر لائن کے لیے کلاس ٹو کے چارٹر لائسنس کی منظوری بھی لی جائے گی۔

انجینئرنگ ترقیاتی بورڈ کی منسوخی کا فیصلہ بھی ایجنڈے میں شامل ہے جب کہ ارکانِ پارلیمان اور عوام کے لیے ٹیکس ڈائریکٹری شائع کرنے کی منظوری دی جائے گی۔

سری لنکاکے ساتھ میری ٹائم ایجنسی معاہدے کی بھی منظوری دی جائے گی، پاکستان اور سوڈان میں سیاحت کے شعبے میں تعاون کا معاملہ بھی زیرِ بحث آئے گا۔

کابینہ اجلاس میں نیشنل بینک اور تاجکستان بینک میں تعاون کا معاملہ بھی زیرِ غور آئے گا، چیئرمین ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان کی تقرری کی منظوری بھی دی جائے گی۔

وزیرِ اعظم کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پبلک پرائیویٹ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کی تقرری کی منظوری بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔

ذرائع کے مطابق وزارت خارجہ اور نائیجیریا کے درمیان دوطرفہ معاہدہ بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔

دوسری جانب ارکان پارلیمنٹ کی ٹیکس تفصیلات برائے 2017 کو شائع کرنے کی منظوری بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔

اس کے علاوہ اسٹیٹ بینک اور نیشنل بینک آف پاکستان کے درمیان معاہدے کی منظوری کے ساتھ ساتھ پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ اتھارٹی کے سی ای او اور چئیرمین ٹریڈنگ کارپوریشن کی تعیناتی بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔

ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ ازسرنو تنظیم سازی کے فیصلے کو واپس لینے کی منظوری بھی دے گی۔



متعللقہ خبریں