بصیرت سے عاری قیادت ہی پاکستان کے خیر سگالی ہاتھ کو پیچھے دھکیل سکتی ہے، عمران خان

عمران خان نے بھارت کو امن مذاکرات کی  پیشکش  کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت ایک قدم ہماری طرف بڑھائے گا تو ہم 2 قدم آگے بڑھیں گے

بصیرت سے عاری قیادت ہی پاکستان کے خیر سگالی ہاتھ کو پیچھے دھکیل سکتی ہے، عمران خان

وزیراعظم پاکستان  عمران خان  کا کہنا ہے کہ مذاکرات کی دعوت ٹھکرانے والی  بھارتی قیادت بصیرت سے عاری ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مذکرات کی بحالی کی دعوت کے جواب میں بھارت کا منفی اور ہٹ دھرمی پر مبنی رویہ باعثِ افسوس ہے۔انہوں نے کہا کہ اپنی پوری زندگی میں نے چھوٹی سوچ والے لوگوں کو بڑے بڑے عہدوں پر قابض ہوتے دیکھا ہے۔ یہ لوگ بصارت سے عاری اور دور اندیشی سے یکسر محروم ہوتے ہیں۔

واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے سے قبل ہی بھارت کو امن مذاکرات کی  پیشکش  کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت ایک قدم ہماری طرف بڑھائے گا تو ہم 2 قدم آگے بڑھیں گے۔

بعد ازاں  انہوں نے وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے کے بعد باضابطہ طور پر بھارت کو مذاکرات کی دعوت دی تھی اور اقوام متحدہ کے اجلاس میں دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کی ملاقات کی درخواست کے لیے وزیر اعظم عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے بھارتی حکام کو  علیحدہ  علیحدہ خطوط لکھے گئے تھے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی  نے اس پیش رفت کے بعد کہا ہے  کہ پاکستان کے جذبہ خیر سگالی پر بھارت کے پیچھے ہٹنے سے افسوس ہوا، بھارت نے ابتدا میں وزرائے خارجہ ملاقات پر آمادگی ظاہر کی اور پھر انکار کے لیے جواز تلاش کیا، ملاقات سے انکار کے لیے بھارت نے جولائی کے معاملے کو ستمبر میں بہانہ بنا کر پیش کیا۔

 



متعللقہ خبریں