یہ انتخابات کا وقت ہے، احتساب کا نہیں، الیکشن کا ہرگز بائیکاٹ نہیں کریں گے: آصف علی زرداری

نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے آصف علی زرداری نے خود پر لگائے جارہے تمام الزامات مسترد کردئیے اور کہا کہ پہلے بھی ایسے کیسز کا سامنا کیا، اب بھی کروں گا۔ سیاستدان کبھی سیاسی طور پر نہیں مرتا

یہ انتخابات کا وقت ہے، احتساب کا نہیں، الیکشن کا ہرگز بائیکاٹ نہیں کریں گے: آصف علی زرداری

پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ الیکشن کا بائیکاٹ زیر غور نہیں،ہمیں ڈیڑھ کروڑ کا نوٹس ملا ہے اور ڈھول 35 ارب کا بجایا جارہا ہے۔

نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے آصف علی زرداری نے خود پر لگائے جارہے تمام الزامات مسترد کردئیے اور کہا کہ پہلے بھی ایسے کیسز کا سامنا کیا، اب بھی کروں گا۔

یہ انتخابات کا وقت ہے ، احتساب پہلے ہونا چاہیے تھا یا الیکشن کے بعد ، آج سپریم کورٹ میں میرے وکلا پیش ہو نگے ، جو بھی ہو نے جارہا ہے اسے جمہوری طریقے سے روکنا ہو گا ،کبھی غیر جمہوری عناصر سے اتحاد نہیں کیا ۔نوازشریف کی خصلت میں ڈنک مارنا ہے ، سب کی سنوں گا میں وہی کرونگا جو ملک اور پارٹی کے مفاد میں ہو ۔سیاستدان کبھی سیاسی طور پر نہیں مرتا ۔فوج گورننس کا ایک ضروری حصہ ہے ۔ جمہوریت کی ٹرین کو پٹڑی سے نہیں اترنے دیں گے۔

پہلے بھی ایسے مقدمات کا سامنا کیا اب بھی کروں گا، ہمارے مخالفین کہیں بیٹھ کر کوئی چال چلیں اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ انہو ں نے کہا کہ بزرگ حسین لوائی پر تشدد کیا جا رہا ہے ۔ ہم اس کی مذمت کرتے ہیں۔ اپنے اوپر لگائے گئے تمام الزامات کو مسترد کرتا ہوں۔

یہ احتساب کا وقت نہیں ہے ۔اس سے شک ہوتا ہے کہ اس کے سیاسی محرکات ہیں ۔احتساب الیکشن سے پہلے یا بعد میں ہونا چاہئے ۔ کیا جیتنے والے کیس نہیں بھگتتے ۔ میں نے اور بی بی شہید نے بھی کیسز بھگتے ہیں۔میں سینیٹر تھا،رکن پارلیمنٹ تھا اس کے باوجود مجھ پر کیسز چلے۔

 پیپلز پارٹی نے کبھی کسی غیر جمہوری قوت کے ساتھ اتحاد نہیں کیا۔ نواز شریف کے مقدمہ کے بارے میں ا نہو ں نے کہا کہ میا ں صاحب نے اپنا مقدمہ صحیح نہیں لڑا۔ان کا دفاع ٹھیک نہیں تھا۔ا س میں غلطیاں تھیں اس وجہ سے ان کو تکالیف ہوئیں ۔

آصف زرداری نے کہا فوج کے کچھ لوگ پیپلز پارٹی کے لوگوں کوان کے حلقوں میں تنگ کر رہے ہیں ،ہمارے ووٹرز کو اس کا پتہ ہے ،پیپلز پارٹی کے نوجوانوں کو کوئی نہیں روک سکتا،جوانی کو کون روک سکتا ہے ،چیئرمین بلاول نے انہیں روکا ہوا ہے ،بلاول صورتحال کو بخوبی سمجھتے ہیں کہ اس کے سیاسی محرکات ہیں۔



متعللقہ خبریں