گھرکےمکین ہی چورنکلے، سینٹ انتخابات میں ایک ارب20 کروڑکی سودے بازی،تمام چورپارٹی سے باہر: عمران خان

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ سینیٹ انتخابات میں اراکینِ اسمبلی گزشتہ 40 برسوں سے اپنا ضمیر بیچ رہے ہیں۔ حالیہ سینیٹ انتخابات سے متعلق کسی پارٹی نے کوئی پرواہ نہیں کی اور ہماری تجاویز کو مسترد کر دیا گیا

گھرکےمکین ہی چورنکلے، سینٹ انتخابات میں ایک ارب20 کروڑکی سودے بازی،تمام چورپارٹی سے باہر: عمران خان

پاکستان تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان نے سینیٹ ہارس ٹریڈنگ میں ملوث اراکینِ اسمبلی کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ مطمئن نہیں کیا تو پارٹی سے نکال دیں گے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ سینیٹ انتخابات میں اراکینِ اسمبلی گزشتہ 40 برسوں سے اپنا ضمیر بیچ رہے ہیں۔ حالیہ سینیٹ انتخابات سے متعلق کسی پارٹی نے کوئی پرواہ نہیں کی اور ہماری تجاویز کو مسترد کر دیا گیا۔ ہم نے سینیٹ الیکشن میں پیسے لے کر ووٹ دینے والوں کیخلاف ایکشن لیا اور کمیٹی میں تحقیقات کے بعد نام سامنے لا رہے ہیں۔

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے سینیٹ الیکشن میں ووٹ بیچنے والے 20پارٹی ارکان کو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ ہم نے ضمیرفروشوں کی شناخت کرلی ہے ‘اگران ارکان نے شوکازکا جواب نہ دیاتو پارٹی سے نکال دیں گے اوریہ افراد بیگناہ ثابت نہ ہوئے تومعاملہ نیب کوبھیج دینگے۔

پریس کانفرنس میں عمران خان نے کہا کہ سینیٹ میں پیسے لیکر بکنے والوں کی تحقیقات کیلئے کمیٹی بنائی ، کون ملوث ہیں ، کئی نام ہمیں شروع ہی میں مل گئے تھے‘ عمران خان نے کہا کہ ہمارے ایم پی ایز کو 4، 4 کروڑ روپے کی پیش کش ہوئی اور جن لوگوں نے ووٹ بیچے انہیں شوکاز نوٹسز جاری کر رہے ہیں‘جنہوں نے اپنا ووٹ بیچا وہ ہماری پارٹی میں مزید نہیں رہ سکتے‘ بیس ایم پی ایز کو پارٹی سے نکالنا برداشت کرسکتے ہیں مگر ضمیر فروشی نہیں۔

اس سے قبل سینیٹ انتخابات میں ووٹ فروخت کرنے والے پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے ایم پی ایز کے ناموں کی رپورٹ چیئرمین عمران کو پیش کی گئی جس میں دعویٰ کیا گیا کہ سینیٹ انتخابات میں ایک ارب 20 کروڑ سے ارکانِ اسمبلی کا ضمیر خریدا گیا۔

رپورٹ کے مطابق تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی نے 60 کروڑ روپے وصول کیے۔ تحریکِ انصاف کے 30 ارکان کو ہارس ٹریڈنگ ڈیل کی آفر ہوئی تاہم اس کے پندرہ ارکان کو ہارس ٹریڈنگ کے دوران رقم کی ادائیگی کی گئی۔



متعللقہ خبریں