سینیٹ کو کاروباری مرکز نہ بنایا جائے : عمران خان

عمران خان نے ایک مرتبہ پھر پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے اتحاد کے امکان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو سے اتحاد کا مطلب آصف زرداری سے اتحاد ہے جو ناممکن ہے

سینیٹ  کو کاروباری مرکز نہ بنایا جائے : عمران خان

عمران خان نے کہا ہے کہ آصف زرداری اور نواز شریف بیرون ملک سے اربوں ڈالر واپس لے آئیں تو دونوں کی توبہ قبول کر لیں گے۔ انہوں نے اس موقع پر چودھری نثار کو پارٹی میں شمولیت کی دعوت اور آزاد حیثیت میں الیکشن لڑنے پر حمایت کا عندیہ بھی دیدیا۔

انہوں نے ایک مرتبہ پھر پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے اتحاد کے امکان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو سے اتحاد کا مطلب آصف زرداری سے اتحاد ہے جو ناممکن ہے۔

عمران خان نے میڈیا سے غیررسمی گفتگو میں کہا کہ پیپلز پارٹی اور نون لیگ چیئرمین سینیٹ کی نشست حاصل کرنے کیلئے پیسے لگا رہے ہیں، دونوں بیرون ملک پڑے اپنے اربوں ڈالر واپس لے آئیں تو ان کی توبہ قبول ہے، لگ رہا ہے کہ عام انتخابات بھی وقت پر ہوں گے، نگران حکومت آتے ہی بہت سارے لوگ ن لیگ کو چھوڑ دیں گے۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا مزید کہنا تھا کہ ایک شخص نے انہیں سینیٹ کے ٹکٹ کیلئے 40 کروڑ روپے آفر کئے، چودھری نثار تحریک انصاف میں آ جائیں تو اچھا ہے، وہ آزاد الیکشن لڑیں تو ہو سکتا ہے ان کی حمایت کریں۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے 6 سینیٹرزکے ناموں کو حتمی شکل دے دی ہے، مولانا سمیع الحق ہمارے اتحادی ہیں، اضافی ووٹ ان کودے سکتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ ایک شخص نے سینیٹ ٹکٹ کیلئے 40 کروڑ روپے کی پیشکش کی، اقتدار میں آکر سینیٹ کا الیکشن براہ راست کرائیں گے۔



متعللقہ خبریں