شام، اسد انتظامیہ وائے پی جی دہشت گرد تنظیم کے ساتھ ادلیب میں کاروائیاں کر رہی ہے

وزیر چاوش اولو کا  نیو یارک ٹائمز کے ایڈیٹر کے نام  پر "شام میں  رونما ہونے والی فلاکت" کے زیر عنوان تحریر کردہ خط شائع

شام، اسد انتظامیہ وائے پی جی دہشت گرد تنظیم کے ساتھ ادلیب میں کاروائیاں کر رہی ہے

وزیر ِخارجہ میولود چاوش اولو   کا کہنا ہے کہ"  علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم وائے پی جی /PKK کا شام میں  ترکی کی سرحدوں سے چند کلو میٹر دوری پر  سر گرم  ِ  عمل  ہونا  ایک ذی فہم اور قابل قبول  فعل  نہیں  ہے،  اب امریکہ کو  خطے میں کس کے اصل  اتحادی ہونے کا فیصلہ کرنے کا وقت آ گیا ہے۔ "

وزیر چاوش اولو کا  نیو یارک ٹائمز کے ایڈیٹر کے نام  پر "شام میں  رونما ہونے والی فلاکت" کے زیر عنوان تحریر کردہ خط شائع ہو گیا ہے۔

 جناب   چاوش اولو   نے لکھا ہے  کہ  "شام میں  خوفناک انجام کے  بادل "  عنوان کے تحت شائع  یہ خبر ، شام میں بشارالاسد انتظامیہ کی جانب سے مخالفین کے طاقتور ہونے والے آخری علاقے میں  خونی  آپریشن کرنے پر توجہ مبذول کرانے  کے اعتبار سے    ایک صحیح فعل ہے اور یہ اس حقیقت کی تصدیق بھی کرتی ہے۔

اقوام متحدہ کے ایک افسر کے  بیان کہ یہ کاروائی  ہزاروں انسانوں  کو علاقے میں  قید کر کے رکھ  دے گی اور "اکیسویں صدی کے  عظیم ترین جانی نقصان کا موجب بنے گی" کی   یاد دہانی کرانے والے ترک وزیر نے  بتایا  ہے کہ "یہ کالم  ایک دوسری  دہشت ناک  پیش  رفت پر بھی روشنی ڈالتا ہے ۔  اسد کے حملوں کا ارتکاب کرنے والے اتحادیوں سے امریکہ تعاون کر رہا ہے۔  تازہ رپورٹوں کے مطابق  شام میں سر گرم عمل   وائے پی جی   نے امریکیوں کے ادا کردہ ٹیکسوں کی رقوم سے ہتھیار اور امداد جمع کی ہے، اس نے اسد کے ساتھ اپنے گٹھ جوڑ بنائے ہیں اور ماہ جولائی میں  اسد اور وائے پی جی معاہدے   کی شرائط کے مطابق  یہ تنظیم  ادلیب  کو  مخالفین کے قبضے سے نجات دلانے کے لیے  ہر ممکنہ تعاون کر رہی ہے۔

 



متعللقہ خبریں