فٹ بال کے عالمی شہرت یافتہ کھلاڑی کاکا اور فیگو پاکستان میں فٹ بال کو فروغ دیں گے

ورلڈ سوکر اسٹارز ایونٹ کے سلسلے میں گزشتہ روز کراچی پہنچنے والے کاکا اور فیگو کا کراچی کے مقامی ہوٹل میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہنا تھا کہ ان کی ٹیمیں 26 سے 29 اپریل کے درمیان کراچی اور لاہور میں مقابل آئیں گی

2019-01-10T154543Z_881462915_RC1F6C24E870_RTRMADP_3_PAKISTAN-SOCCER.JPG
2019-01-10T154503Z_1075732053_RC15D9F93C70_RTRMADP_3_PAKISTAN-SOCCER.JPG
2019-01-10T154439Z_458111951_RC1223CEA540_RTRMADP_3_PAKISTAN-SOCCER.JPG
2019-01-10T154452Z_504251442_RC1D96A13700_RTRMADP_3_PAKISTAN-SOCCER.JPG

عالمی شہرت یافتہ فٹ بالرز ریکارڈوکاکا اور لوئس فیگونے کہا ہے کہ وہ پاکستان آکر بہت خوش ہیں، یہاں کے لوگوں کی میزبانی اور فٹ بال شائقین کا جذبہ دیکھ کر خوشی ہوئی ہے

ورلڈ سوکر اسٹارز ایونٹ کے سلسلے میں گزشتہ روز کراچی پہنچنے والے کاکا اور فیگو کا کراچی کے مقامی ہوٹل میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہنا تھا کہ ان کی ٹیمیں 26 سے 29 اپریل کے درمیان کراچی اور لاہور میں مقابل آئیں گی۔

 انہوں نے پاکستانی ٹیم کے کوچ ہوزے انتونیو نوگوئیرا کو اسٹیج پر بلاتے ہوئے کہا کہ ہم اپریل میں دس عظیم کھلاڑیوں کے ہمراہ پاکستان میں میچز کھیلیں گے ۔ اس موقع پر قومی فٹ بال ٹیم کے کپتان صدام حسین اور مڈفیلڈر سعداللہ کی موجودگی میں کاکا اور فیگو نے اعتراف کیا کہ پہلی مرتبہ پاکستان آمد پر انہیں اس ملک کے عوام اور ماحول کو جاننے کا موقع ملا جو زبردست ہے۔

 سخت سیکیورٹی میں ایئرپورٹ سے ہوٹل پہنچنے والے دونوں غیر ملکی اسٹارز کو صدام حسین نے پاکستانی ٹیم کی جرسیاں پیش کیں اور ان کا پاکستان آمد پر شکریہ ادا کیا۔

دونوں پلیئرز نے پاکستانی میڈیا کے سوالوں کا دوستانہ انداز سے جواب دیا اور نوجوانوں کو ہمت نہ ہارتے ہوئے محنت کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کھلاڑیوں کو پروان چڑھانے اور کھیل کے فروغ کیلئے مناسب اقدامات کرے ۔کاکا نے تسلیم کیا کہ پاکستان میں کرکٹ کی طرح فٹ بال زیادہ مقبول نہیں لیکن اب دروازے کھل رہے ہیں لہذا نوجوان فٹ بالرز کیلئے مشورہ ہے کہ وہ اپنے خوابوں کی تکمیل کیلئے اٹھ کھڑے ہوں۔

 فیگو نے کہا کہ حکومتی سرپرستی کے بغیر پروفیشنل کھلاڑی سامنے نہیں آسکتے۔ اس موقع پر کاکا نے کہا کہ میرے لیے پاکستان آنا اعزاز کی بات ہے، یہاں کے لوگ کھیلوں سے محبت کرتے ہیں، ملک میں فٹبال کا بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے، مستقبل میں پاکستان میں اکیڈمی قائم کرکے بہت خوشی ہوگی،انھوں نے کہا کہ ورلڈ ساکر اسٹارز کے تحت 26 سے 29 اپریل تک کراچی اور لاہور میں شیڈول میچز دلچسپ رہیں گے۔

پرتگال سے تعلق رکھنے والے لوئس فیگو نے کہا کہ پاکستان فٹبال کو اس وقت مختلف چیلنجز کا سامنا درپیش ہے، حکومتی سرپرستی کے بغیر پروفیشنل کھلاڑی سامنے نہیں آسکتے، پاکستان کو ورلڈ کپ کھیلنے کے لیے سخت محنت کرنا ہوگی جبکہ عالمی رینکنگ بنانے کیلیے گراس روٹ پرمضبوط بنیاد ضروری ہے۔

دنیا کے ٹاپ اسٹار جمعرات کی دوپہر خصوصی پرواز کے ذریعے کراچی پہنچے جہاں ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا انہیں سندھی ٹوپی اور اجرک کا تحفہ دیا گیا۔ عالمی کھلاڑیوں کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کرکٹ کو زیادہ سپورٹ کیا جاتا ہے ضروری ہے حکومت اور دیگر ادارے دنیا کے سب سے بڑے کھیل کو سپورٹ کریںیہاںباصلاحیت کھلاڑی موجود ہیں، اس میں کوئی شک نہیں اگرپاکستان فٹ بال یم پر توجہ دی جائے گی وہ ورلڈ کپ ٹورنامنٹ بھی کھیل سکتی ہے۔

دونوں لیجنڈ فٹ بالرز نے مقامی ہوٹل میں ورلڈ ساکر اسٹارز سے متعلق بریفنگ دی، وہ آج شام ہی لاہور کے لیے روانہ ہوجائیں گے۔



متعللقہ خبریں