اخبارات کی جھلکیاں

13/09/17

اخبارات کی جھلکیاں

*** روز نامہ وطن نے  "مرد بیمار ترکی نہیں بلکہ  یورپی یونین ہے" کے  زیر عنوان خبر میں   اقوام وآزادی  یورپ گروپ  کے فرانسیسی رکن  ایڈورڈ  فراند   کے بیان کو جگہ دی  جس میں انہوں نے یورپی یونین  حکام کے مؤقف پر نکتہ  چینی کرتے ہوئے کہا کہ  ایک صدی قبل ہم   ترکی کو یورپ  کے ایک  مرد بیمار کے طور پر بیان کرتے تھے تا ہم  آج میرے خیال  میں  اصل  مرد بیمار یورپی یونین  ہے۔

انہوں نے حکام بالا سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ "ترکی ایک بڑا ملک   اور ترک ایک عظیم قوم ہیں، یہ آپ کی توقعات  سے کہیں بڑھ کر  مراعات کے مستحق  ہیں۔

 

*** روزنامہ وطن نے   خبر دی ہے کہ جرمن چانسلر انگیلا مرکل نے    ترکی کو اسلحے کی  خرید  پر مکمل پابندی  کی مخالفت  کی ہے   مگر  کہا ہے کہ  اسلحے کی خریداری کو محدود ضرور کیا گیا ہے  کیونکہ  ترکی داعش کے خلاف جنگ میں  ہماری اتحادی اور کلیدی ملک ہے ۔

 

*** روزنامہ صباح    کے مطابق ،15 جولائی کی ناکام بغاوت  سے متعلق  امریکہ نے  ترکی کو ایک  سرکاری دستاویز  روانہ کی ہے جس  کی رو سے یہ ثابت ہو گیا ہے کہ باغیوں  کا تعلق گولن تنظیم سے  وابستہ تھا ۔

امریکی محکمہ برائے قومی سلامتی   نے  اس سلسلے میں ضروری دستاویز  ترک محکمہ پولیس کو  روانہ کر دی ہے  جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ  جنوری 2016   کو امریکہ میں داخلے کے وقت زیر تفتیش لیے جانے والے شخص کمال باتماز نے  پینسیلوانیا میں  فتح اللہ گولن        کی رہائش گاہ  پر  اقامت اختیار کی تھی ۔

 

*** روزنامہ ینی شفق  نے   لکھا ہے کہ  15 جولائی 2016 کی ناکام بغاوت کے دوران قومی اسمبلی کو بموں کا نشانہ بنایا گیا تھا  جسے اب      اسلحہ شکن  نظام سے لیس کیا جا رہا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ  یہ ڈرون نظام   اسمبلی پر غیر قانونی طور سے پرواز کرنے والے کسی بھی طیارے کو  تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے  جسے ترک کمپنی اسیل سان نے  تیار کیا ہے۔

 

*** روزنامہ اسٹار  کی رو سے  ترکی میں رہائش خریدنے  والے عرب سرمایہ کاروں نے  اب   استنبول کے تیسرے ہوائی اڈے اور کنال استنبول جیسے بڑے منصوبوں کی جانب توجہ دیتےہوئے  رہائشیں خریدنے  میں دلچسپی ظاہر کی ہے ۔ دبئی میں منعقدہ سٹی اسکیپ 2017 کے تحت   ترک   رہائش و املاک  کی غیر منقولہ  اشتراکی کمپنی  کے جنرل مینیجر  مراد قُرم نے بتایا کہ عرب سرمایہ کاروں  کی اس سلسلے میں دلچسپی قابل غورہے  اور وہ ان منصوبوں کے اطراف میں  سرمایہ کاری کے ا مکانات  کا جائزہ لے رہے ہیں۔

 

 

 

 

 



متعللقہ خبریں