ڈینش وزیر برائے ہجرت کا روزے داروں کے خلاف متنازعہ بیان،پارٹی کی لاتعلقی

ڈینش پارٹی کی وزیر برائے ہجرتانگر اسٹوج برگ نے کہا تھا کہ مقامی مسلمانوں کو ماہ رمضان میں چھٹی لے لینی چاہیے کیونکہ روزہ دار مسلمانوں کی وجہ سے معاشرے کے تحفظ اور سلامتی کے لئے خطرات لاحق ہو سکتے ہیں

ڈینش وزیر برائے ہجرت کا روزے داروں کے خلاف متنازعہ بیان،پارٹی کی لاتعلقی

ڈنمارک کی سیاسی جماعت ڈینش لبرل پارٹی نے اپنی کابینہ کی ایک رکن کے مسلمانوں کے متعلق متنازعہ بیان سے لاتعلقی اختیار کر لی ہے۔

 ڈینش پارٹی کی وزیر برائے ہجرت و انضمام انگر اسٹوج برگ نے کہا تھا کہ مقامی مسلمانوں کو ماہ رمضان میں چھٹی لے لینی چاہیے کیونکہ مذہب ایک ذاتی معاملہ ہے اور    روزہ دار مسلمانوں کی وجہ سے معاشرے کے تحفظ اور سلامتی کے لئے خطرات لاحق ہو سکتے ہیں ،اگر انہوں نے روزہ رکھنا ہی ہے تو پھر باہر مت نکلیں، گھر پرہی رہیں

 اسٹوج برگ نے یہ بات اپنے ایک ادارئیے میں لکھی تھی جوگزشتہ  پیر کو شائع ہوا تھا تاہم  ان کی پارٹی کی اعلیٰ قیادت نے کہا کہ پارٹی ان کے نظریات کی حمایت نہیں کرتی۔



متعللقہ خبریں